القاعدہ سے تعلقات کا الزام، امریکہ نے یمن کے 2 شہریوں پر پابندیاں عائد کردیں

بین الاقوامی

واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) امریکی محکمہ خزانہ کے بیرونی اثاثہ جات کی نگرانی کے شعبے نے القاعدہ سے تعلقات کے الزام میںیمن کے 2 افراد پر اقتصادی پابندیاں عائد کردیں۔ یہ پابندیاں نئے صدارتی ایگزیکٹو آرڈر کے تحت عائد کی گئی ہیں جس کے بعد مذکورہ لوگوں کے تمام اثاثہ جات ضبط کرلیے جائیں گے جبکہ کسی بھی امریکی شہری کو ان سے لین دین کی اجازت نہیں ہوگی
امریکی محکمہ خزانہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق القاعدہ براہ راست امریکی و عالمی برادری کے مفادات کے لیے خطرہ ہے اور یمن کے شہری ہاشم محسن الحامد اور خالد علی الا راداہ القاعدہ کو ہتھیاروں کی ترسیل، فنڈز کی فراہمی اور ان کے جنگجوﺅں کو تحفظ فراہم کرنے میں ملوث ہیں جس کی و جہ سے ان پر پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔

پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار قائد اعظم یونیورسٹی میں خواجہ سرا لیکچرر تعینات
بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ الحامد یمن کا ایک قبائلی رہنما ہے جو القاعدہ کو ہتھیاروں کی ترسیل اور فنڈز کی فراہمی میں ملوث ہے جبکہ خالد الاراداہ شدت پسند تنظیم القاعدہ کا لیڈر ہے جو اپنی تنظیم کو ہتھیاروں کی فراہمی کے عوض پیسے وصول کرنے میں ملوث رہا ہے جبکہ یہ شخص شدت پسند تنظیم کو لڑنے کیلئے جنگجو اور ہتھیار بھی فراہم کرتا ہے۔