افغانستان میں امریکی ڈرون حملہ ،جی ایچ کیو اور سری لنکن ٹیم پر حملوں میں ملوث قاری یاسین تین ساتھیوں سمیت ہلاک

بین الاقوامی

پشاور (ڈیلی پاکستان آن لائن )افغانستان میں امریکی ڈرون حملے کے نتیجے میں پاکستان کا مطلوب دہشت گرد قاری یاسین تین ساتھیوں سمیت ہلاک ہو گیا ۔میڈ یا رپورٹس کے مطابق افغانستان کے صوبے پکتیکا کے علاقے بیرمل میں امریکی ڈرون نے ایک کمپاﺅنڈ کو نشانہ بنا یا جس کے نتیجے میںانتہائی مطلوب دہشت گرد قاری یاسین تین ساتھیوں سمیت ہلاک ہو گیا۔ہلاک ہونے والوں میں استاد اسلم ،طیب محسود اور صادق گر باز کے نام شامل ہیں ۔قاری یاسین ایف آئی اے کو مطلوب افراد میں سے تھااور اس کا تعلق لودھراں سے تھا۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ قاری یاسین فاتح جھنگ میں دہشت گردی کی واردات، سول لائنز راولپنڈی حملہ، آر اے بازار راولپنڈی حملہ، راولپنڈی میں سابق صدر پرحملہ، جی ایچ کیو حملہ، سری لنکن ٹیم حملہ، شجاع خانزادہ، آئی ایس آئی لاہورآفس حملہ، ملتان آئی ایس آئی آفس حملہ، میریٹ ہوٹل حملہ، داتا دربار حملہ سمیت متعدد دہشت گردی کے واقعات میں ملوث تھا۔مارے جانے والے دہشت گرد قاری یاسین کے خلاف متعدد مقدمات درج تھے۔ قاری یاسین نے جندللہ، القاعدہ کی مختلف حملوں میں ان کو مدد فراہم کی۔ آئی ڈی ایز اور بم بنانے سمیت مختلف کاموں کا ماہر تھا۔ جبکہ مختلف دہشت گرد گروہوں کے ساتھ کام کرتے ہوئے تربیت حاصل کی تھی۔