مونٹ ایورسٹ سر کرنے والے کوہ پیماﺅں کو جی پی ایس کے ذریعے کنٹرول کیا جائے گا

بین الاقوامی

کھٹمنڈو (ڈیلی پاکستان آن لائن ) نیپالی حکومت نے بہار کے آغاز میں مونٹ ایورسٹ سر کرنے والے کوہ پیماﺅں سے رابطے میں رہنے اور چوٹی سر کرنے کے دوران مشکلات سے بچنے کے لئے جی پی ایس کا سہارا لینے کا فیصلہ کیا ہے۔300ڈالر مالیت کی جی پی ایس ڈوائسز ابتدائی طور پر چندکوہ پیماﺅں کو تجرباتی بنیادوں پر دی جائیں گی۔ ان ڈوائسز کے استعمال سے خطرناک حالات سے دوچار ہونے والے کوہ پیماﺅں کو ریسکیو کرنے میں آسانی ہوگی۔

پاکستانی باہمت خاتون جو رکشہ چلا کر اپنی گزر بسر کررہی تھی ، اب وہ کس حال میں ہے اور روزنامہ پاکستان کو انٹرویو کا کیا اثرہوا؟ جان کرآپ کو بھی پاکستانیوں پر فخر ہوگا
نیپال ٹورازم ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ درگا دتادھکل نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سال سینکڑوں کوہ پیماءمونٹ ایورسٹ سر کرنے آئیں گے جن کی سیکورٹی اور چوٹی سر کرنے کے دوران پیش آنے والے نامساعد حالات سے انہیں محفوظ رکھنے کے لئے نیپالی حکومت جی پی ایس ڈوائس استعمال کرے گی۔ تجرباتی طور پر چند کوہ پیماﺅں کو یہ ڈوائسز دی جائیں گی۔گذشتہ سال 19کوہ پیما مونٹ ایورسٹ سر کرتے ہوئے ہلاک ہوئے تھے جبکہ61کوہ پیما شدید زخمی ہوئے تھے۔ ان ڈوائسز کے استعمال کے بعد مونٹ ایورسٹ سر کرنے کے دوران ہلاک اور زخمی ہونے والے افراد کی تعداد میں کمی ہونے کی توقع ہے۔ ڈوائسز کا ڈیٹا مونٹ ایورسٹ پر کوہ پیماﺅں کے تمام لمحات کو محفوظ کرے گا ۔ ان کی واپسی پر ڈیٹا چیک کیا جائے گا کہ وہ پہاڑکی چوٹی پر پہنچیں ہیں یا راستے سے ہی واپس آکر ایورسٹ سر کرنے کا دعوی کر رہے ہیں۔

بھارتی کوہ پیما جوڑے کی ماونٹ ایورسٹ سر کرنے کی جعلی تصاویر پکڑی گئیں: نیپال نے 10سال کی پابندی عائد کر دی
گذشتہ سال نیپالی حکومت کواس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب ایک ہندوستانی جوڑے نے مونٹ ایورسٹ سر کرنے کا دعوی کرتے ہوئے کوہ پیماﺅں کے بین الاقوامی ادارے سے خصوصی سرٹیفکیٹ بھی موصول کیا تھا۔مگر بعدازاں ان کی مونٹ ایورسٹ پر بنائی گئی تصاویر جدید فوٹو ایڈیٹنگ سوفٹ وئیر کا کمال ثابت ہوئی۔