بھارت نے چاند سے انتہائی قیمتی چیز چرانے کا منصوبہ بنالیا، کیا چیز ہے؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

بین الاقوامی

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارت آج تک اپنے عوام کو بیت الخلا کی سہولت فراہم کرنے میں تو ناکام رہا ہے لیکن اب اس نے توانائی کے حصول کے لیے چاند پر کمندیں ڈالنی شروع کر دی ہیں۔انڈین سپیس ریسرچ آرگنائزیشن کے ایک پروفیسر نے امید ظاہر کی ہے کہ 2030ءتک بھارت چاند سے توانائی حاصل کر کے اپنی ضروریات پوری کرنی شروع کر دے گا۔ویب سائٹ livemint.comکی رپورٹ کے مطابق حال ہی میں نئی دہلی میں ہونے والی ایک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انڈین سپیس ریسرچ آرگنائزیشن کے پروفیسر ڈاکٹر سیوتھانو پلے نے بتا یا کہ چاند پر کھدائی کر کے ہیلیئم 3حاصل کی جائے گی جس سے بھارت کی توانائی کی ضروریات پوری ہو سکیں گی۔

ایشیاءکا وہ جزیرہ جس پر داعش نے قبضہ کرلیا، انتہائی تشویشناک خبر آگئی
انڈین سپیس ریسرچ آرگنائزیشن کے مستقبل کی منصوبہ بندی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 2030میں چاند سے توانائی حاصل کرنے کا پراجیکٹ مکمل ہو جائے گا۔ہماری آرگنائزیشن کی ترجیحات میں سب سے پہلے چاند سے ہیلیئم 3حاصل کرنا ہے۔ چاند پر اتنی ہیلیئم 3موجود ہے کہ پوری دنیا کی توانائی کی ضروریات پوری کی جا سکتی ہیں۔ انڈین سپیس ریسرچ آرگنائزیشن چاند سے ہیلیئم 3حاصل کرے گی اور اسے زمین پر لا کر اس سے توانائی پیدا کرے گی۔ تاہم بھارت ہی کے ناقدین کا کہنا ہے کہ مودی سرکار پہلے اپنے عوام کے لیے بیت الخلا کا انتظام کرے پھر چاند سے توانائی حاصل کرنے کے منصوبے بنانے کا سوچے۔