روسی فوج بھی حرکت میں آگئی، یہ ٹینک کس ملک کی سرحد پر پہنچائے جارہے ہیں؟ کوئی عرب ملک نہیں بلکہ۔۔۔ جان کر پاکستانی بھی بے حد پریشان ہوجائیں گے

بین الاقوامی

ماسکو (نیوز ڈیسک) شمالی کوریا پر امریکی حملے کے خطرے کے پیش نظر چینی افوج پہلے ہی سرحدوں پر پہنچ چکی ہیں۔ اب یہ تشویشناک انکشاف بھی سامنے آ گیا ہے کہ روسی ٹینکوں کی بڑی تعداد کو بھی شمالی کوریا کی سرحد کی جانب روانہ کر دیا گیا ہے، جس سے یہ اندازہ لگانا مشکل نہیں کہ ایک خوفناک جنگ کا خطرہ کس قدر سنگین ہو چکا ہے ۔
ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق روس کے ٹینک دونوں ممالک کی 11 میل مشترکہ سرحد کی جانب بڑھتے دیکھے گئے ہیں، جن کی ویڈیو بھی سامنے آگئی ہے۔ یہ ویڈیو ایک مال گاڑی پر لدے درجنوں ٹینکوں کی ہے جو شمالی کوریا کی سرحد کی جانب جانے والی ریلوے لائن پر رواں دواں دکھائی دیتی ہے۔

فوجی اڈے پر امریکی حملے کے بعد بشارالاسد نے اپنے لڑاکا طیارے ایک ایسی جگہ پہنچادئیے کہ امریکہ حملہ تو کیا میلی آنکھ سے دیکھنے کی جرات بھی نہ کرے گا، ایسی کونسی جگہ ہے؟ جان کر آپ کو بھی بے حد حیرت ہوگی
غیرملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ جب اس بارے میں روسی حکومت کے ترجمان دمتری پیسکوف سے رابطہ کیاگیا تو انہوں نے شمالی کوریا کی سرحد کی جانب افواج کی نقل و حرکت پر تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔ ان کا کہنا تھا کہ روس کی سرحدوں کے اندر کسی بھی جگہ افواج کی تعیناتی عوامی گفتگو کا موضوع نہیں۔
دیگر تصاویر اور ویڈیوز میں روس کے ہیلی کاپٹر بھی شمالی کوریائی سرحد کی نگرانی کرتے دیکھے گئے ہیں۔ کچھ دفاعی تجزیہ کاروں کا یہ بھی کہنا ہے کہ امریکہ کے شمالی کوریا پر حملے کا وقت قریب آن پہنچا ہے اور اسی حملے کے پیش نظر روس نے اپنی افواج کو سرحد پر منتقل کردیا ہے۔
واضح رہے کہ اس سے پہلے چین نے بھی شمالی کوریا کے ساتھ ملنے والی اپنی سرحد پر افواج تعینات کر دی ہیں۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا پر امریکی حملے کی صورت میں لاکھوں کی تعداد میں پناہ گزینوں کا سیلاب ہمسایہ ممالک کی جانب روانہ ہوا، اور اسی خدشے کے پیش نظر روس اور چین اپنی سرحدوں کو بند کررہے ہیں۔