خوشاب پولیس پر اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام، قومی کمیشن برائے انسانی حقوق نے ڈی پی او خوشاب کو طلب کرلیا

اسلام آباد

اسلام آباد (ویب ڈیسک)انسانی حقوق کمیشن نے خوشاب پولیس کی جانب سے انسانی حقو ق کی خلاف ورزی، اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے پر نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او خوشاب کو طلب کر لیا ہے ،نوٹس شہری(ع) کی جانب سے دائرکی گئی آن لائن درخواست پر لیا گیا ہے، معاملے کی سماعت 20 دسمبر کو ہوگی، درخواست میں موقف اختیارکیاتھا کہ خوشاب پولیس کے سب انسپکٹر اظہر اقبال ، خرم اقبال و دیگر اہلکاروں نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے پرچی جوا کے الزام میں بغیر وارنٹ اور لیڈی پولیس کے شہری کے گھر گھس گئے اور وہاں اہل خانہ کو ہراساں اور زدو کوب کیا، جبکہ وارنٹ بھی پوچھنے پر نہ دکھائے گئے، قانون کی حکمرانی اور قانو ن کے محافظوں کی جانب سے قانون ہاتھ میں لینے پر ملوث اہلکاروں کے خلاف سخت قانونی و تادیبی کارروائی کی استدعا بھی کی گئی جس پر ڈی پی او آفس خوشاب کی جانب سے جواب جمع کرایا گیا کہ چھاپہ مخبر کی اطلاع پر سب انسپکٹر اظہر اقبال نے ماتحت اہلکاروں کے ہمراہ مارا اور ایف آئی آر درج کرادی گئی ہے مگرجواب تسلی بخش نہ ہونے پر قومی کمشن برائے انسانی حقوق کے سنئیر کنسلٹنٹ نے ڈی پی او خوشاب کو نوٹس بھیج دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ انسانی حقوق کے ایکٹ 2012 کی سیکشن9 کے تحت سامنے 20 دسمبر کو پیش ہو یا اپنے نمائندے کوپیش کریں پیش نہ ہونے کی صورت میں کمشن قانون کے تحت کاروائی کرنے کا پابند ہوگا۔

ڈیلی پاکستان کے یو ٹیوب چینل کو سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں