قائد اعظم یونیورسٹی کل ہرحال میں کھلے گی اور تدریسی عمل بھی جاری رہے گا: وائس چانسلر

اسلام آباد

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) وائس چانسلر قائد اعظم یونیورسٹی ڈاکٹرجاوید اشرف نے کہا ہے کہ کل قائد اعظم یونیورسٹی کو ہر حال میں کھولا جائے گا اور جامعہ میں معمول کے مطابق تدریسی عمل بھی جاری رکھا جائے گا، جبکہ پولیس نے یونیورسٹی میں ہنگامہ آرائی اور تدریسی عمل میں رکاوٹ بننے والے37طلبہ کے وارنٹ گرفتار ی حاصل کرتے ہوئے ان کی گرفتاری کے لئے ٹیمیں بھی تشکیل دے دی ہیں۔

جنید صفدر کی طلعت حسین کی بیٹی سے منگنی کی خبریں، معروف صحافی نے سختی سے تردید کردی
تفصیلات کے مطابق گذشتہ 15دنوں سے قائداعظم یونیورسٹی میں لسانی طلبا تنظیموں کے احتجاج باعث تدریسی عمل معطل ہے جبکہ طلبا نے تیرہ نکاتی چارٹر آف ڈیمانڈ کی منظوری تک اپنا احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کردیا جبکہ وائس چانسلر ڈاکٹر جاوید اشرف نے ان طلبہ سے سختی سے نپٹنے کا اعلان کردیا ہے اور یونیورسٹی کو کل بروز جمعرات دوبارہ کھولنے کا اعلان کردیا ہے۔ دوسری جانب اسلام آباد پولیس نے جامعہ میں ہنگامہ آرائی کرنے والے 37 طلباء کے وارنٹ گرفتاری حاصل کرلئے ہیں اور ان کی گرفتار ی کے لئے پولیس کی ٹیمیں بھی تشکیل دے دی گئی ہیں ، پولیس آئندہ 24گھنٹوں میں ان طلباءکی گرفتاری کے لئے چھاپے مارے گی۔ اسلام آباد پولیس نے جن طلبہ کے وارنٹ گرفتاری حاصل کئے ہیں ان میں سہیل رشید،اسدشیر،اسداللہ،عدیل،کامران ، عرفان اللہ، امجدعلی، نوروزخان، محمدعثمان،راحب علی ، غلام نبی،ثناءاللہ،ذاکرعلی،شمس الدین،کامران بلوچ اور دیگر شامل ہیں۔
واضح رہے کہ2ہفتے قبل یونیورسٹی کے چند طلبہ نے شراب پی کر گرلز ہاسٹلز کے سامنے غل غپاڑا اور سیکیورٹی گارڈز پر تشدد کیا جس کے خلاف ایکشن لیتے ہوئے ان کو یونیورسٹی سے نکال دیا گیا تھا ۔ اس واقعے کے بعد نکالے گئے طلبا کے ساتھیوں نے ان کی بحالی کے لئے احتجاجی تحریک شروع کردی تھی ، جس دوران بڑے پیمانے پر ہنگامہ آرائی بھی دیکھنے میں آئی۔ اس احتجاج کے دوران قائد اعظم یونیورسٹی مکمل طور پر بند رہی جبکہ آج16دنوں بعد وائس چانسلر نے جامعہ کو کھولنے کا اعلان کردیا ہے۔