بارہ ملین درہم قطری کاروبار میں لگنے کا ذرہ برابر ثبوت نہیں: عدالت

اسلام آباد

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سپریم کورٹ نے پانامہ کیس پر تاریخی فیصلہ سناتے ہوئے کہاہے کہ گلف سٹیل کی لین دین نقد اور بغیر دستاویز کے ہوناعجیب بات ہے۔ فیصلے میں کہا گیاہے کہ 12ملین درہم کاقطری کاروبارمیں لگنے کاذرہ برابرثبوت نہیں۔پانامہ کیس فیصلے کے دیگرمندرجات بھی سامنے آرہے ہیں۔

فیصلے میں تحریر ہے کہ پانامہ کیس میں مریم نواز کونوازشریف کے زیرکفالت ثابت کرنے کیلئے ثبوت کافی نہیں۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم کوتحفوں میں اتنی بڑی رقم کیوں ملی،اس کاپتہ لگاناہوگا۔ فیصلے میں یہ بھی درج ہے کہ نوازشریف کاحسین نوازکے کاروبارمیں حصے دار ہونا خارج از امکان نہیں۔ شبہ ہے وزیراعظم لندن فلیٹس کے مالک ہوسکتے ہیں۔عدالت نے پاناما پیپرز پر ایف بی آرکے ردعمل پرسخت تنقیدکی ہے۔ عدالت نے ایف بی آرکے کردارپرشدید مایوسی کا اظہارکیاہے۔ جسٹس اعجازالاحسن نے موجودہ چیئرمین نیب کو جانبدار اور متعصب قرار دیا۔ جسٹس اعجازالاحسن کاکہناتھاکہ انہیں اتنی اہم،حساس تحقیقات نہیں دی جاسکتیں۔