کراچی سینٹرل جیل سے فرار 2 دہشتگرد افغانستان پہنچ گئے

کراچی

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن )سینٹرل جیل کراچی کے اہلکاروں کی مدد سے تین ماہ قبل فرار ہونے والے دہشت گرد افغانستان فرار ہو گئے،سہولت کاروں کو سیکیورٹی اداروں نے گرفتار کر لیا ۔سی ٹی ڈی نے وزارت داخلہ کی رپورٹ جمع کرائی ہے جس میں بتا یا گیا کہ لشکر جھنگوی سے تعلق رکھنے والے دہشت گرد شیخ ممتاز عرف فرعون اور محمد احمد عرف منا 13 جون کو کراچی سینٹرل جیل سے فرار ہوئے تھے جو اب افغانستان پہنچ چکے ہیں۔سنٹرل جیل کے اہلکاروں نے دہشت گردوں کو فرار ہونے میں مدد فراہم کی ،ایک اہلکار نے دہشت گردوں حلیہ تبدیل کرانے کے لیے موقع اور سامان دیا ،دہشت گردوں نے کراچی کی سنٹرل جیل میں بال تراشے ،شیو کی اور لبا س تبدیل کر کے 13 اور 14 جون کی درمیانی شب سینٹرل جیل میں قائم جوڈیشل کمپلیکس کی عدالت سے سریا کاٹ کر با آسانی فرار ہوگئے تھے۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ پولیس دہشتگردوں سے 30 گھنٹے پیچھے تھی۔ پولیس کو ایک روز گزرنے کے بعد فرار ہونے کا بتایا گیا تھا ۔شیخ ممتاز اور احمد عرف منا پہلے حیدر آباد پہنچے اور وہاں سے بلوچستان پہنچ کر چمن بارڈر سے افغانستان فرار ہو گئے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں دہشت گردوں کو جیل سے فرار کرانے اور افغانستان پہنچانے والے تمام سہولت کاروں کو گرفتار کرلیا گیا ہے تاہم قانون نافذ کرنے والے اداروں کی سر توڑ کوششوں اور آپریشن کے باوجود فرار ہونے والے دونوں دہشت گرد ہاتھ نہ آئے۔
مزید خبریں :روہنگیامسلمانوں کا قتل عام، نیشنل پیس اینڈ جسٹس کونسل کااوآئی سی اور اقوام متحدہ سے میانمار پرپابندی لگانے، تعلقات ختم کرنے کا مطالبہ