ذہین بچے میرٹ پرداخلہ نہ ملنے پرذہنی مریض بن رہے ہیں،ان کامستقبل پرائیویٹ میڈکل کالجز کے رحم کرم پرنہیں چھوڑسکتے،ہائی کورٹ

لاہور

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ نے پرائیویٹ میڈکل کالجزمیں میرٹ کے برعکس داخلوں پرسیکرٹری صحت کو16فروری کوطلب کرلیاہے،عدالت نے ریمارکس دیئے کہ ذہین بچے میرٹ پرداخلہ نہ ملنے پرذہنی مریض بن رہے ہیں۔

پی ایس ایل میچز انٹرنیٹ پر دیکھنے کے خواہشمندوں کو کوئٹہ گلیڈی ایٹرزاور ٹیپ میڈ ٹی وی نے انتہائی شاندار خوشخبری سنا دی ،بہترین سروس متعارف کروا دی

بچوں کے مستقبل کوپرائیویٹ میڈکل کالجز کے رحم کرم پرنہیں چھوڑسکتے۔جسٹس شاہد جمیل خان نے نمرانصیر، عائشہ یوسف سمیت دیگرطالبات کی درخواستوں پرسماعت کی ، درخواست گزاروں کی جانب سے میاں شکیل احمد سمیت دیگروکلاءنے موقف اختیارکیا کہ پرائیویٹ میڈیکل کالجز اضافی فیس لے کر میرٹ کے برعکس طلبہ کو داخلے دے رہے ہیں جس سے ذہین اورزیادہ نمبرحاصل کرنے والے طلبہ کی حق تلفی ہورہی ہے،درخواست گزاروں نے عدالت سے استدعا کی کہ پرائیویٹ میڈیکل کالجز میں میرٹ پرداخلوں کا حکم دیا جائے، عدالت نے پی ایم ڈی سی کوحکم دیا کہ وہ اس معاملے کی تحقیقات کرے اگربے ضابطگی پائی گئی تو اس معاملہ کی ایف آئی اے سے تحقیقات کروائی جائے گی،عدالت نے کیس کی مزید سماعت 16فروری تک ملتوی کرتے ہوئے سیکرٹری سپلائزڈ ہیلتھ کو ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کاحکم دیتے ہوئے پی ایم ڈی سی اوریو ایچ ایس سے بھی جواب طلب کرلیاہے۔