لومیرج کے بعدحاملہ بیوی کو قتل کرنے والے شوہر کی 4 ساتھیوں سمیت ضمانت خارج ،سپریم کورٹ کا ملزموں کوگرفتار کرنے کا حکم

لاہور

لاہور(نامہ نگار خصوصی )سپریم کورٹ نے پسند کی شادی کے بعد حاملہ بیوی کو قتل کرنے کے مقدمہ میں ملوث شوہر سمیت 4 ملزموں کی ضمانت کی درخواستیں منسوخ کرتے ہوئے انہیں گرفتار کرنے کا حکم دے دیاہے۔

بلوچستان میں نیشنل ایکشن پلان کے تحت کارروائیوں کی تفصیلات جاری، 2 سال میں 1ہزار359کومبنگ آپریشن ، 552دہشت گرد ہلاک

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میںجسٹس منظور احمد ملک کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے بلقیس بی بی کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ملزم شرجیل نے درخواست گزار کی بیٹی شبانہ سے پسند کی شادی کی اور حاملہ ہونے پر بیٹی کو قتل کر دیا، انہوں نے عدالت کو بتایا کہ ملزموں شرجیل ، ارشاد بی بی ، سمرینہ اور افتخار نے عدالت سے حقائق چھپا کر ہائیکورٹ سے ضمانت حاصل کر رکھی ہے اور ٹرائل میں پیش نہیں ہو رہے، عدالتی حکم پر ڈی پی او شیخوپورہ محمد سرفراز نے پیش ہو کر عدالت کو بتایا کہ مفرور ملزم شرجیل نے تھانہ اے ڈویڑن شیخوپورہ میں گرفتاری دیتے ہوئے اعتراف کیا ہے کہ اس نے ہی اپنی بیوی شبانہ کا گلہ دبا کر قتل کیا ہے .

انہوں نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ملزم کی ماں ارشاد بی بی، بہن سمرینہ اور بہنوئی افتخار فرار ہیں جنہیں گرفتار کر لیا جائے گا، عدالت نے چاروں ملزموں کی ضمانت کی درخواستیںمنسوخ کرتے ہوئے شیخوپورہ پولیس کو حکم دیا ہے کہ ملزموں کو فوری گرفتار کیا جائے۔