لڑکی کو شادی کا جھانسہ دے کر زیادتی کا نشانہ بنانے والے ڈی ایس پی کی درخواست ضمانت مسترد

لاہور

لاہور ( آن لائن) سپریم کورٹ نے لڑکی کو شادی کا جھانسہ دے کر زیادتی کا نشانہ بنانے والے ڈی ایس پی کی درخواست ضمانت مسترد کر دی، ملزم کو احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا ۔

سپریم کورٹ کے جسٹس منظور احمد ملک کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے ملزم ڈی ایس پی محمد اعظم کی درخواست ضمانت پر سماعت کی، ملزم کا موقف تھا کہ اس کے خلاف راحت نامی لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کا جھوٹا الزام عائد کیا گیا ہے لہٰذا اس کی ضمانت منظور کی جائے، لڑکی کی جانب سے ایڈوکیٹ آفتاب باجوہ نے بتایا کہ ملزم نے ایک مقدمے کی تفتیش کے دوران لڑکی کو بلایا اور نشہ آور مشروب پلا کر اسے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، بعد ازاں وہ اسے شادی کا جھانسہ دے کر بلاتا رہا۔ عدالتی حکم پر آر پی او گوجرانوالہ نے رپورٹ پیش کرتے ہوئے بتایا کہ ملزم تفتیش میں گناہ گار ثابت ہوا ہے، عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد ملزم کی ضمانت مسترد کر دی جس پر اسے احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا۔