وقت آگیا ہے شہریوں کو تنگ کرنے والے اعلیٰ افسروں کوبھاری جرمانے کئے جائیں ،ہائی کورٹ

لاہور

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب آفس کے ملازمین کے عہدوں کو اپ گریڈ نہ کرنے پرچیف سیکرٹری پنجاب سے وضاحت طلب کر لی، عدالت نے ریمارکس دیئے کہ سائلین سالہا سال سیکرٹریٹ کے دھکے کھاتے رہتے ہیں مگران کی شنوائی کرنے والا کوئی نہیں ،وقت آگیا ہے کہ شہریوں کو تنگ کرنے کے ذمہ داراعلیٰ افسروں کوبھاری جرمانے کئے جائیں ۔

وزیراعظم سے استعفیٰ کا مطالبہ ، آل پاکستان وکلاءکنونشن تنازع کی شکل اختیار کرگیا ،کنوشن کے حامی سپریم کورٹ بار کے سیکرٹری معطل

جسٹس محمد قاسم خان نے محمد اقبال و دیگر کی درخواست پر سماعت کی۔درخواست گزاروں کے وکیل ملک اویس خالد نے موقف اختیار کیا کہ عدالتی حکم کے باوجود ایڈووکیٹ جنرل کے ملازمین کی سیٹوں کو اپ گریڈ نہیں کیا جا رہا۔انہوں نے کہا کہ اے جی آفس کے ملازمین کی سیٹیں اپ گریڈ نہ ہونے سے ملازمین کی حق تلفی ہو رہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ سیکرٹری خزانہ پنجاب کے فیصلے کے خلاف چیف سیکرٹری پنجاب کے پاس ملازمین کی اپیل زیرالتواہے جس کا ایک دہائی سے فیصلہ نہیں کیاجا سکاجس پرعدالت نے مذکورہ ریمارکس دیتے ہوئے چیف سیکرٹری پنجاب سے وضاحت طلب کرلی ،اس کیس کی مزید سماعت 24مئی کو ہوگی۔