بلدیاتی نمائندے ابھی تک بیوروکریسی کے رحم و کرم پرکیوں ہیں، ہائی کورٹ نے حکومت سے جواب طلب کرلیا

لاہور

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے بلدیاتی نمائندوں کو مکمل اختیارات نہ دینے کے خلاف درخواست پر پنجاب حکومت کو جواب داخل کرانے کے لئے 24 مارچ تک مہلت دے دی ہے.

گروپ انشورنس کی رقم کاٹتے ہیں توملازمین کو ادائیگی کیوں نہیں کرتے ،وکلاءبحث کے لئے طلب

چیف جسٹس سید منصور علی شاہ نے محمود اختر نقوی کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ آئین کا آرٹیکل 140 (اے )مکمل فعال بلدیاتی نظام کا کہتا ہے لیکن پنجاب حکومت بلدیاتی نمائندوں کو مکمل اختیارات نہیں دے رہی، بلدیاتی نمائندے انتخابات کے بعد بھی بیوروکریسی کے رحم و کرم پر ہیں، بلدیاتی انتخابات کے بعد بھی بیوروکریسی ہی ترقیاتی سکیموں کی منظوری دے رہی ہے ،پنجاب کے بلدیاتی نمائندوں کو مکمل اختیارات دینے کا حکم دیا جائے، پنجاب حکومت کی طرف سے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل انوار حسین پیش ہوئے اور موقف اختیار کیا کہ پنجاب حکومت اس معاملے پر تفصیلی جواب داخل کرانا چاہتی ہے ،مہلت دی جائے، عدالت نے پنجاب حکومت کے وکیل کی استدعا منظور کرتے ہوئے مزید سماعت 24مارچ تک ملتوی کر دی ۔