ہائی کورٹ نے تحریک انصاف کے سابق ایم این اے کی جعلی ڈگری کیس میں سزا معطل کردی

لاہور

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے جعلی ڈگری کیس میں تحریک انصاف کے سابق ایم این اے چودھری اعجاز کی 3سال قید کی سزا کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے انہیں ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

اورنج لائن ٹرین منصوبے سے متعلقہ دستاویزات اور تفصیلات سول سوسائٹی کے وکیل کو فراہم کرنے کا حکم

جسٹس عبدالسمیع خان کی سربراہی میں قائم دو رکنی بنچ نے چودھری اعجاز کی اپیل پر سماعت کی، این اے 108منڈی بہاﺅالدین سے سابق ایم این اے چودھری اعجاز کے وکلاءنے موقف اختیار کیا کہ الیکشن ٹربیونل نے بی اے کی جعلی ڈگری کی بنیاد پر انہیں نااہل قرار دیا اور جعلی ڈگری کی بنیاد پر ٹرائل کورٹ نے 3 سال قید کی سزا سنائی ہے، قانون کے مطابق قلیل مدتی قید کی سزا میں ضمانت منظور ہو سکتی ہے ،ملزم کی قید کی سزا کا فیصلہ عبوری طور پر معطل کرتے ہوئے انہیں ضمانت پر رہا کیا جائے، محکمہ پراسیکیوشن کی طرف سے ایڈیشنل پراسکیوٹر جنرل عبدالصمد پیش ہوئے، انہوں نے موقف اختیار کیا کہ سابق ایم این اے کو 17فروری 2017ءکو گرفتار کیا گیا تھا، انہیں گرفتار ہوئے ابھی ایک ماہ ہوا ہے، قلیل مدتی سزا کے قانون میں ملزم کا کم از کم 6 ماہ قید کاٹنا لازمی ہے، دو رکنی بنچ نے تفصیلی دلائل سننے کے بعد سابق ایم این اے کی 3سال قید کی سزا کا فیصلہ عبوری طور پر معطل کرتے ہوئے انہیں ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے ، عدالت نے مزید سماعت غیرمعینہ مدت تک ملتوی کر دی۔