فاروق ستارنے اسٹیبلشمنٹ سے کہہ کر ہمارے ساتھ ملاقات کی: مصطفیٰ کمال

قومی

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) چیئرمین پاک سرزمین پارٹی مصطفیٰ کمال کا کہنا ہے کہ فاروق ستارنے اسٹیبلشمنٹ سے کہہ کر ہمارے ساتھ ملاقات کی، ہم اسٹیبلشمنٹ سے سب سے زیادہ ملاقاتیں کرتے ہیں لیکن اس کے ایجنٹ نہیں ہیں۔
ایم کیو ایم پاکستان کے الزامات کے جواب میں بلائی گئی پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران مصطفیٰ کمال نے انکشاف کیا کہ ان کی اور فاروق ستار کی میٹنگ سربراہ ایم کیو ایم پاکستان کے کہنے پر ہوئی، ’ ہمیں اسٹیبلشمنٹ نے فاروق ستار سے ملوایا ، جب ہم پہنچے تو فاروق ستار پہلے سے وہاں بیٹھے ہوئے تھے ،فاروق ستار کی خواہش پر ہمیں ملاقات کیلئے بلوایا گیا‘۔

یہ خبر بھی پڑھیں: مصطفی کمال سے کبھی بھی اکیلے میں ملاقات نہیں کی ،ہمیشہ میرے ساتھ پارٹی رہنما ہوتے تھے:فاروق ستار
انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ پچھلے 8 مہینے سے فاروق ستار اسٹیبلشمنٹ کے ذریعے کال کرکے انہیں بلاتے ہیں، پاکستان کا کون سا صحافی یا سیاستدان ہے جو اسٹیبلشمنٹ سے بات نہیں کرتا ۔ ’ میں سب سے زیادہ اسٹیبلشمنٹ سے بات کرتا ہوں لیکن اس کا ایجنٹ نہیں ہوں ، اگر ایجنٹ ہوتا تو سینیٹر شپ نہ چھوڑتا بلکہ ایم کیو ایم میں رہ کر ایجنٹ بنتا، اگر انیس قائم خانی نے ایجنٹ بننا ہوتا تو وہ رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینئر کے عہدے پر رہتے ہوئے ایجنٹ بنتے‘۔

پی ایس پی اور ایم کیو ایم کے درمیان مذاکرات سیف ہاﺅس میں ہوئے، رہنماﺅں کے موبائل فون بند کرادئیے گئے ، سیاسی جماعت کا اہم رہنما، سرکاری اہلکار شریک ، متحدہ کے انضمام کی بات کی گئی: شاہ زیب خانزادہ کا دعویٰ، فاروق ستارکا تصدیق اور تردید سے انکار
مصطفیٰ کمال نے کہا کہ فاروق ستار نے ایک ایک اینکر اور صحافی کو فون کرکے یہ سمجھایا ہے کہ انہیں اسٹیبلشمنٹ اغوا کرکے لی گئی تھی لیکن ذرا سی سخت بات کرتا ہوں تو یہ اسٹیبلشمنٹ سے شکایت کردیتے ہیں اور ہمیں کال آجاتی ہے کہ بھائی ذرا سا ہاتھ ہلکا رکھو۔