چیئرمین نیب کے تقرر کا اختیار سپریم کورٹ اورہائیکورٹس کے چیف جسٹس صاحبان کو دیا جائے، سراج الحق

قومی

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی ملک میں قانون اور آئین کی حکمرانی چاہتی ہے ہمیں امید ہے کہ اعلیٰ عدلیہ پاناما پیپر میں شامل436 افراد کیخلاف کارروائی کرے گی،سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ نیب چیئرمین کی مدت پوری ہو چکی ہے ، حکومت اور اپوزیشن لیڈر چیئرمین نیب کے تقرر کیلئے مشاورت کر رہے ہیں،جماعت اسلامی نے تجویز دی ہے کہ چیئرمین نیب کے تقرر کا اختیار وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر سے واپس لیا جائے اور یہ اختیارسپریم کورٹ اور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس صاحبان کو دیا جائے تاکہ دیانتدار اور بااصول شخص کو اہم عہدے پر تعینات کیا جاسکے۔امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ کرپشن کا معاملہ صرف نواز شریف کیخلاف کارروائی سے حل نہیں ہو گا،اعلیٰ عدلیہ تمام آفشور کمپنیاں بنانے والوں کیخلاف کارروائی کرے،انہوں نے کہا کہ غریب لوگ تنگدستی، مفلسی اور غربت کی وجہ سے مر رہے ہیں اور اشرافیہ ملکی وسائل لوٹ کر بیرون ملک منتقل کر رہے ہیں ہم چاہتے ہیں کہ معاشی دہشتگردوں کیخلاف کارروائی کی جائے تاکہ ملکی وسائل لوٹنے کا سلسلہ بند ہوسکے۔