پیپلز پارٹی کا فاٹا حقوق کی ہر تحریک میں ساتھ دینے کا اعلان ،کسی گورنر یا پرمٹ راج کو نہیں مانتے، مقامی افراد نے دھرنا دیا تو شریک ہوں گے:آصف زرداری

قومی

اسلا م آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پیپلز پارٹی کے کو چیئرمین اور سابق صدرآصف علی زرداری کا حقوق فاٹا کی ہر تحریک میں ساتھ دینے کا اعلان، کسی گورنر یا پرمٹ راج کو نہیں مانتے، مقامی افراد نے دھرنا دیا تو شریک ہوں گے، سابق صدر کی  فاٹا ارکان کو یقین دہانی،ملاقات میں ملکی سیاسی صورتحال پرتفصیلی تبادلہ خیال 

کوٹلی سیانی میں بھارت کی طرف سے داغا گیا12کلووزنی آرٹلری شیل برآمد

تفصیلات کے مطابق  فاٹا سے تعلق رکھنے والے ارکان پارلیمنٹ نے اسلام آباد میں سابق صدر اور پی پی پی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری سے ملاقات کی۔ سابق صدر سے ملاقات کرنے والے فاٹا ارکان میں حاجی شاہ جی گل آفریدی اور ساجد طوری سمیت دیگر ارکان شامل تھے۔ ملاقات کے دوران فاٹا ارکان نے سابق صدر سے فاٹا کے خیبر پختونخوا میں انضمام سے متعلق ترمیم موخر کرنے کے معاملے پر تفصیلی گفتگو کی۔ سابق صدر نے انہیں اپنی جماعت کی جانب سے مکمل حمایت کی یقین دہانی کرائی اور حقوق فاٹا کی ہر تحریک میں ساتھ دینے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ فاٹا کے عوام کے ساتھ ہیں اور کسی گورنر راج یا پرمٹ راج کو نہیں مانتے، فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کیلئے فاٹا کے عوام کے ساتھ ہیں، فاٹا کے حقوق کیلئے اگر مقامی لوگوں نے اسلام آباد میں دھرنا دیا تو پیپلز پارٹی ان کے شانہ بشانہ کھڑی ہو گی۔ آصف زرداری نے یہ بھی کہا کہ اگر دھرنا ماہ رمضان میں ہوا تو شرکا کو روزانہ افطاری میری طرف سے کروائی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ فاٹا کے حقوق کیلئے پارلیمنٹ کے اندر اور باہر بھرپور آواز اٹھائیں گے

آصف زرداری کا گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہم حکومت کو فاٹا اصلاحات کے عمل کو ختم کرنے کی اجازت نہیں دیں گے جبکہ ایف سی آر کا خاتمہ، صدر کا قانون سازی کا اختیار پارلیمنٹ کو منتقل ہونا چاہیے، فاٹااصلاحاتی پیکج کا اعلان حکومت کی سیاسی شعبدہ بازی تھی جبکہ فاٹا کے عوام کو حقوق نہ دینا آگ سے کھیلنے کے مترادف ہے۔