مفکر پاکستان ، حکیم الامت ڈاکٹر محمد اقبال کا79واں یوم وفات آج منایا جارہا ہے

قومی

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) مفکرپاکستان شاعر مشرق ڈاکٹرسر علامہ محمد اقبال کا 79واں یوم وفات آج 21 اپریل بروزجمعہ ملک بھر میں انتہائی عقیدت واحترام سے منایاجارہا ہے۔

صوفی ازم اور عارفانہ کلام انسانوں کے لیے روحانی تسکین ہی نہیں،معاشرے میں بڑھتی ہوئی عدم برداشت کا اچھا توڑ ہے:عریشہ علی
شاعر مشرق علامہ اقبال 9 نومبر 1877 کو سیالکوٹ میں پیدا ہوئے،فلسفیانہ اور مفکرانہ سوچ اور دور اندیشی جیسی خصوصیات نے اقبال کی شاعری کو عارفانہ مقام بخشا، ادرویشانہ انداز اور دنشورانہ فکر نے اقبال کی شاعری کو اس طرح نکھا را جس کی نظیر نہیں ملتی۔ زبورعجم، ارمغان حجاز، شکوہ، جواب شکوہ، اور بال جبریل جیسے شاہکار مجموعہ کلام نے ادب کو ایک نیا دوام بخشا۔

کشمیریوں کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھیں گے۔بھارت سمجھوتہ ایکسپریس سانحے کی تحقیقات میں پس و پیش سے باز رہے: نفیس ذکریا
21 اپریل 1938 کو علامہ اقبال اس دار فانی سے کوچ کر گئے ،آپ کا مزار تاریخی بادشاہی مسجد کے سامنے ہے۔علامہ اقبال کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ان کے یوم وفات پر ملک بھرمیں سرکاری و غیرسرکاری سطح پرتقاریب، تقریری مقابلوں، سیمینارز، مذاکروں اوردیگر پروگراموں کااہتمام کیاجارہا ہے، جس میں حکیم الامت ڈاکٹرعلامہ اقبال کی امت مسلمہ کی بیداری اور تحریک پاکستان کے لیے عظیم خدمات پر روشنی ڈالی جارہی ہے۔