پاک امریکہ سٹریٹجک مذاکرات کا مشترکہ اعلامیہ جاری ،ماضی کی غلطیاں نہ دہرائیں: پاکستان، سرحد پار سے دہشتگردی بات چیت کا بنیادی نکتہ ہے: امریکہ

قومی

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) پاک امریکہ سٹریٹجک مذاکرات کا مشترکہ اعلامیہ جاری کردیا گیا ہے جس کے مطابق امریکی وزیر خارجہ کہتے ہیں افغانستان کو محفوظ بنانے میں پاکستان کا کردار اہم ہے،سرحد پار دہشت گردی کا معاملہ بات چیت کا بنیادی نکتہ ہے۔ مشیر خارجہ کہتے ہیں امریکہ افغانستان سے نکلتے ہوئے ماضی کی غلطیاں نہ دہرائے۔مشترکہ اعلامیہ میں امریکہ نے نیوکلئیر سیفٹی اور دہشت گردی کے خاتمے میں دہشت گردی کے خلاف حکومت پاکستان کی کوششوں کی تعریف کی گئی ہے ۔واشنگٹن میں پاک امریکہ سٹریٹجک مذاکرات کے ا فتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے امریکی وزیر خارجہ جان کیری کا کہنا تھا کہ پاکستان کے ساتھ اقتصادی اورسلامتی کے شعبوں میں مزید تعاون چاہتے ہیں۔ امریکہ پاکستان کو ایشین ٹائیگر بننے میں مدد دے گا۔ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان میں پائیدارامن کی کوششوں میں مصروف ہے اور قیام امن کے لیے ہر ممکن تعاون کرے گا تاہم امریکہ پاکستان کودہشت گردی اورافغانستان کے حوالے سے ہی نہ دیکھے۔ سرتاج عزیز نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعلیم کے شعبے میں تعاون بڑھانے کے لیے چھٹاورکنگ گروپ بحال کیاجائے۔ سرتاج عزیز کا کہناتھا پاکستان بھارت کے ساتھ بھی اچھے تعلقات چاہتا ہے۔ پاک امریکہ اسٹرٹیجک مذاکرات میں دونوں ممالک کے دفاع ،خارجہ اور قومی سلامتی کے حکام نے شرکت کی۔