وطن سے محبت جزو ایمان ،ملک سے بے وفائی کرنے والوں کو تاریخ غداروں کے نام سے یاد کرتی ہے ،تمام مسالک کے علماءنے اجتماعی فتویٰ جاری کر دیا

Ramadan News

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام وطن سے محبت کی دوٹوک بات کرتا ہے اور وطن سے محبت کو ایمان کا درجہ دیا گیا ہے ،اس لئے ہر مسلمان کیلئے لازم ہے کہ وہ جس ملک کا باشندہ ہو اس ملک سے ٹوٹ کر محبت کرے اور اس پر کوئی کمپرومائز نہ کرے، وطن عزیز پاکستان لاکھوں قربانیوں کے بعد اسلام کے نام پر حاصل کیا گیا ملک ہے، اس لئے یہ ضروری ہے کہ ہر پاکستانی اپنے وطن سے ہر لمحہ اور ہر سطح پر والہانہ محبت کا ثبوت دے، اس کے ایک ایک کونے کے تحفظ کیلئے مخالف قوت سے ٹکرا یاجائے۔

ان خیالات کااظہار  نجی ٹی وی چینل کی خصوصی رمضان ٹرانسمیشن کے پروگرام ” اسلام اور میری زندگی“ بعنوان ” وطن سے محبت“ کے موضوع پر علمائے کرام نے اجتماعی فتویٰ جاری کرتے ہوئے کیا۔ جن جید علماءکرام نے پروگرام میں شرکت کی ان میں متحدہ جمعیت اہل حدیث کے سربراہ علامہ  سید ضیاءاللہ بخاری ، علامہ عبداللہ ثاقب ،سید وقار الحسنین نقوی،علامہ مفتی ابوابکر اعوان شامل تھے۔پروگرام کے میزبان محمد ضیاءالحق نقشبندی نے کہا کہ یہ حقیقت کسی تعارف کی محتاج نہیں ہے کہ وطن سے اپنائیت انسانی ضمیر اور لہو میں شامل ہوتی ہے، جو لوگ وطن سے بے وفائی کرتے ہیں تاریخ انہیں غداروں کے نام سے یاد کرتی ہے اور محب وطن لوگ ایسے عناصر پر لعنت بھیجتے ہیں۔ رسول کریم ﷺ نے وطن کی محبت کو ایمان کا درجہ قرار دیا ہے، آپ ﷺ جب مکہ سے ہجرت کرکے مدینہ تشریف لے گئے اور ایک اسلامی ریاست کی بنیاد رکھی جہاں معاشرے کے ہر انسان کو انصاف ملتا تھا ، بنیادی حقوق ملتے تھے، کسی کے ساتھ ناانصافی نہیں ہوتی تھی اور  ایک خوشحال معاشرہ قائم تھا۔ ایسے حالات میں بھی سرکار دوعالم ﷺ اپنے آبائی وطن مکہ کو یاد کرتے تھے اور اس سے اپنی محبت کا اظہار فرماتے تھے، بحیثیت پاکستانی یہ ہمارے لئے ضروری ہے کہ ہم وطن کے مفادات، وطن کی محبت، پاکستان کی ترقی اور خوشحالی پر کسی چیز یا کسی عمل کو ترجیح نہ دیں، یہی ہمارے انسان اور مسلمان ہونے کا تقاضا ہے۔ اس موقع پر علمائے کرام نے ایک اعلامیہ پر بھی  دستخط کئے ۔