امریکہ ، بیس بال میچ میں قاتلانہ حملہ ، ری پبلکن کانگریس میں سمیت 4افراد شدید زخمی ، حملہ آور بھی مارا گیا

علاقائی

واشنگٹن(بیورو رپورٹ) واشنگٹن کے قریب ری پبلکن پارٹی کے قانون سازوں کے ایک گروپ پر بیس بال کھیلنے کے دوران ایک قاتلانہ حملے میں نوریانا ریاست سے تعلق رکھنے والے ایک کانگریس مین سٹیفن سکایزے شدید زخمی ہو گئے۔ ان کے ساتھ چار دوسرے افراد بھی معمولی زخمی ہوئے۔ ورجینیا ریاست میں واشنگٹن کے نواحی شہر الیگزینڈریا میں ایک اکیلے گن مین نے وائی ایم سی اے کی بیس بال گراؤنڈ میں ری پبلکن پارٹی کے قانون سازوں کے ایک گروپ پر فائر کھول دیا جس سے ری پبلکن پارٹی کے ایوان نمائندگان میں وہپ کانگریس مین سٹیفن سکایزے کی پیٹھ میں گولی لگی جنہیں فوری طور پر واشنگٹن کے ایک ہسپتال میں منتقل کر دیا گیا۔ ان کے دفتر کی اطلاع کے مطابق کانگریس مین کی صورتحال تسلی بخش ہے۔ صدر ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس سے جاری ہونے والے ایک بیان میں خود یہ اطلاع دی ہے کہ حملہ آور بھی ہلاک ہو گیا ہے۔ موقع پر موجود پولیس نے حملہ آور پر قابو پانے سے پہلے جوابی فائرنگ میں اسے شدید زخمی کر دیا تھا۔ جس کی اب شناخت ہو گئی ہے ۔66سالہ جیمز ہوگ کنسن کا تعلق سینٹ لوئیس کے نواحی ٹاؤن بیلی ول سے ہے ۔دیگر زخمیوں میں کانگریس مین کی حفاظتی پولیس کے دو ارکان اور سٹاف ممبر شامل تھے۔ عینی شاہدین کے حوالے سے پولیس رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ تقریباً دس منٹ تک فضاء پر دہشت طاری رہی جس کے دوران حملہ آور اور پولیس کے درمیان گولیاں چلتی رہیں۔ زخمی ہونے والے کانگریس مین سکایزے ایک کنارے پر کھڑے تھے جنہیں پیچھے سے پیٹھ کر گولی لگی اور وہ گرنے کے بعد رینگتے ہوئے آگے بڑھتے گئے۔ حملہ آور کی گولیوں سے بچتے کیلئے وہاں موجود کانگریس مین، ان کے سٹاف کے ارکان اور بچے پناہ کی تلاش میں بھاگ کھڑے ہوئے۔پولیس کے مطابق گن مین نے کم از کم پچاس فائر کئے۔ ہلاک شدہ گن مین کی بیوی نے پولیس کو بتایا کہ گن مین گزشتہ دو ماہ سے الیگزینڈریا میں رہ رہا تھا اور بے روزگار تھا اور جلد ہی اپنے آبائی شہر کو واپس جانا چاہتا تھا۔شوٹنگ کا یہ واقعہ الیزینڈریا میں جس جگہ پیش آیا وہ وائٹ ہاؤس سے تقریباً سات میل دور ہے جہاں کانگریس کے متعدد ارکان اگلے روز ہونے والے کانگریس کے بیس بال کے سالانہ خیراتی مقابلے ہونے والے تھے جس کی پریکٹس کے لئے کانگریس مین جمع ہوئے تھے۔ زخمی افراد میں ٹیکساس کے کانگریس مین راجر ولیمز کا ایک سٹاف ممبر زیک بارتھ اور ایک لابنگ فرم کے ڈائریکٹر میٹ میکا بھی شامل تھے۔ کیپٹل پولیس کے زخمی افسروں میں ڈیوڈ بیلی اور کرسٹل گرینر شامل ہیں جن کی بہادرانہ کارروائی کے نتیجے میں زیادہ نقصان نہیں ہوا اور حملہ آور کو زخمی حالت میں پکڑ لیا گیا ۔ ایک اطلاع کے مطابق کسی شخص نے حملے سے قبل ایک گاڑی والے سے پوچھا تھا کہ ا س وقت جو کانگریس مین پریکٹس کر رہے ہیں ان کا تعلق ری پبلکن پارٹی سے ہے یا ڈیمو کریٹک پارٹی ہے۔ تاہم اس وقت ری پبلکن پارٹی کے ارکان پریکٹس کر رہے تھے حملہ آور کے مقاصد کیا تھے فوری طور پر معلوم نہیں ہو سکا۔ تاہم پولیس اس سلسلے میں تفتیش کر رہی ہے۔
سٹیفن سکایزے