ڈسکہ میں طالب علم کی ہلاکت، پولیس اور طلبہ میں تصادم ، آنسو گیس کی شیلنگ، پتھراﺅ، حالات کشیدہ ہوگئے

سیالکوٹ

سیالکوٹ(ڈیلی پاکستان آن لائن)ڈسکہ میں طالب علم بس تلے آکر جاں بحق ہوگیا جس کے بعد شہر کے حالات انتہائی کشیدہ ہوگئے ہیں، طلبہ نے مرکزی شہری تین گھنٹے سے بند کردی ہے جبکہ بس ڈرائیور کی تلاش میں طلبہ نے مقامی سکول کا گھیراﺅ کر لیا ہے جس کی وجہ سے سینکٹروں معصوم بچے سکول میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں ، پولیس نے مشتعل طلبہ کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کی شیلنگ کی اور ان پر لاٹھی چارج کیا جبکہ طلبہ پولیس پر مسلسل پتھراﺅ کر رہے ہیں۔

امریکی خفیہ اطلاعات پر افغانستان سے پاکستان منتقل کئے جانے والے غیر ملکیوں کو پاک فوج نے آپریشن کے بعد بازیاب کر الیا: آئی ایس پی آر
تفصیلات کے مطابق ڈسکہ میں ایک طالب علم بس تلے آکر جاں بحق ہوگیا ،طالب علم کی ہلاکت کے بعد دیگر طلبہ سے بچنے کے ڈرائیور نے مقامی سکول میں پناہ لی، طلبہ بس کو آگ لگاکر مرکزی شاہراہ کو بلاک کردیا جبکہ وہ ڈرائیور کا پیچھا کرتے ہوئے سکول پہنچ گئے اور سکول کا گھیراﺅ کر لیا ، اس دوران سینکٹروں بچے سکول کے اندر محصور ہوکر رہ گئے جبکہ ان کے والدین سکول کے باہر بچوں کو لینے کے لئے کھڑے ہیں۔ مشتعل طلبہ بس کے ڈرائیور کو قابو کرنے کے درپے ہیں جبکہ پولیس کی کوشش ہے کہ وہ ڈرائیور کو گرفتار کرے مگر طلبہ پولیس کے راستے میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔ پولیس نے طلبہ سے مذاکرات کی کوشش کی مگر وہ اس میں ناکام رہے جس کے بعد انہوں نے آنسو گیس کی شیلنگ کی اور مشتعل طلبہ پر لاٹھی چارج کیا، طلبہ نے جوابا پولیس پر پتھراﺅ کیا جس سے متعدد پولیس اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں، تاہم3گھنٹوں سے جاری کشیدگی تاحال ختم ہونے کا نام نہیں لے رہی۔