شیرون کی مبینہ قاتلہ نیپال فرار، پولیس نے والدہ اور بہن کو حراست میں لے لیا، ملزمہ کی گرفتاری کیلئے انٹرپول سے رابطے کا فیصلہ

سیالکوٹ

سیالکوٹ ( ڈیلی پاکستان آن لائن) فیس بک پر دوستی کرکے گوجرانوالہ کے نوجوان کو قتل کرنے والی نائلہ نامی لڑکی نیپال فرار ہو گئی جس کے بعد پولیس نے ملزمہ کی والدہ اور بہن کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کردی ۔ پولیس نے ملزمہ کی گرفتار کیلئے انٹرپول سے رابطہ کرنے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق تھانہ بڈیانہ کی حدود میں قتل ہونے والے نوجوان شیرون کی مبینہ قاتلہ اس کی فیس بک کی خاتون دوست نائلہ نکلی جو اسے قتل کرنے کے بعد نیپال  فرار ہوگئی۔ ملزمہ کے بیرون ملک فرار ہونے کے بعد پولیس نے اس کی والدہ اور بہن کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کردی ہے۔
ہومو سائیڈ انویسٹی گیشن یونٹ کے انچارج ندیم اشرف کا کہنا ہے کہ بیرون ملک فرارہونے والی نائلہ کی گرفتاری کیلئے انٹرپول سے رابطہ کیا جائے گا اور ملزمہ کو پاکستان لا کر قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔ ندیم اشرف نے بتایا کہ بیرون ملک فرارہونے والی نائلہ کا ایک بھائی ڈکیتی وراہزنی کی وارداتوں میں ملوث تھا اور کچھ عرصہ پہلے پولیس سے مقابلہ میں مارا گیاتھا ۔

شیرون کیا کچھ بیچ کر نائلہ سے ملنے گیا ؟ مکمل تفصیلات جاننے کیلئے یہاں کلک کریں
واضح رہے کہ گوجرانوالہ کے 24 سا لہ نوجوان شیرون کی سمبڑیال کی نائلہ نامی لڑکی سے فیس بک پر دوستی ہو گئی تھی ۔ ایک دن شیرون اپنی دوست کو ملنے سیالکوٹ آیا تو اسے قتل کر دیا گیا ۔ نوجوان کی نعش تھانہ بڈیانہ کی حدود سے ملی تھی جس پر پولیس نے مقدمہ درج کرکے معاملے کی تفتیش شروع کی اور دو ماہ کی محنت کے بعد قاتلوں کا سراغ لگانے میں کامیاب ہوگئی۔