سپاٹ فکسنگ سکینڈل، ایف آئی اے نے باقاعدہ تحقیقات کا آغاز کردیا

کھیل

لاہور (سپورٹس رپورٹر)پی سی بی کی درخواست پر ایف آئی اے نے پی ایس ایل اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل کی باقاعدہ تحقیقات کا آغاز کر دیا۔اسپاٹ فکسنگ کیس کی تحقیقات کے لیے ایف آئی اے حرکت میں آگئی ایف آئی اے کی جانب سے جاری کردہ نوٹسز پر کرکٹر خالد لطیف اور محمد عرفان ایف آئی اے کے سامنے پیش ہو گئے دونوں کرکٹر نے اسپاٹ فکسنگ کیس میں اپنا بیان بھی حکام کو ریکارڈ کروا دیا ۔کرکٹر شرجیل خان اور شاہ زیب حسن کل اپنا بیان ایف آئی اے کو ریکارڈ کروائیں گے جبکہ ناصر جمشید سے وطن واپسی پر تحقیقات کی جائیں گی ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پی سی بی حکام نے اسپاٹ فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں کے زیر استعمال آٹھ موبائل فونز فرانزک تجزیے کے لیے ایف آئی اے حکام کے حوالے کر دئیے جبکہ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث تمام کھلاڑیوں کے نام بھی ای سی ایل میں شامل کرنے کے لیے وزارت داخلہ کو سفارش کر دی ۔ایف آئی اے ذرائع کا کہنا کے کہ پی ایس ایل میں21 ارب روپے کا جوا کھیلا گیا جبکہ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں نے ایک بال کے 10 لاکھ روپے وصول کئے ہیں حکام کا کہنا ہے کہ تحقیقات مکمل کرنے کے بعد فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں کے خلاف مقدمات بھی درج کئے جائیں گے۔