گیلانی کی نااہلی کیخلاف زائدالمیعاد اپیل پر نوٹس جاری ،قانون کی نظر میں سب برابرہیں : سپریم کورٹ

گیلانی کی نااہلی کیخلاف زائدالمیعاد اپیل پر نوٹس جاری ،قانون کی نظر میں سب ...

زائد المیعاد اپیل پر رعایت دی گئی تو روایت بن سکتی ہے ، سزا کے خاتمے تک نااہلی کا خاتمہ ممکن نہیں : عدالت

گیلانی کی نااہلی کیخلاف زائدالمیعاد اپیل پر نوٹس جاری ،قانون کی نظر میں سب برابرہیں : سپریم کورٹ

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی کی نااہلی کیخلاف انٹر اکورٹ اپیل زائد المیعادہونے پر پر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے تین ہفتوں کے لیے سماعت ملتوی کردی ۔چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے آٹھ رکنی بنچ نے سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی کی اپیل کی سماعت کی ۔ دوران سماعت چیف جسٹس نے کہا کہ انٹراکورٹ اپیل مقررہ مدت گزرنے کے بعد204 دن تاخیر سے دائر کی گئی جس پر سابق وزیر اعظم کا موقف تھا کہ مقررہ مدت کے بعداپیل دائرکرنے کی وجوہات تحریر کر دی ہیں۔ جسٹس خلجی نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ تاخیرسے اپیل کرنے کی وجہ پڑھیں اور بتائیں کیا آپ کو سننے کاقانونی جوازہے؟ راجہ پرویز اشرف کے خلاف توہین عدالت کا نوٹس کب خارج ہوا؟جس پر یوسف گیلانی کا کہنا تھا کہ اپیل دائر کرنے میں تاخیر کا فیصلہ دانستہ نہیں،نئی پیش رفت پر اپیل دائر کی گئی ، وفاقی حکومت نے خط لکھ کر وہ وجہ ختم کردی جوان کی سزا کی بنیاد بنی، راجہ پرویز اشرف کی جانب سے خط تحریر کرنے سے موقف کی تائید ہوئی،راجہ پرویز اشرف کیخلاف نوٹس 14نومبر کو خارج ہوا۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہا کہ اگر میعاد میں رعایت دی گئی تو یہ روایت بن سکتی ہے، آپ وزیراعظم رہے لیکن قانون کی نظر میں سب برابر ہیں، عدالتی حکم میں کہا گیا کہ اپیل میعاد کے بعد دائر ہوئی ،اس خامی کو دور کرنے کے لیے درخواست بھی دائر کی گئی، اپیل کنندہ کا موقف ہے کہ انہوں نے نظرثانی درخواست دی تھی،عدالت نے اس سماعت کے دوران کہا تھا توہین عدالت کی سزا ختم ہوئے بغیر نظرثانی درخواست کی سماعت نہیں ہوسکتی۔چیف جسٹس نے متفرق درخواست دائر کرنے پر محمود اختر نقوی کی سرزنش کی ۔بعدازاں عدالت نے ڈاکٹر مبشر حسن سمیت دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت تین ہفتے کے لیے ملتوی کردی ۔

مزید : اسلام آباد /Headlines

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...