اس خاتون کے دانت میں درد ہوا اور جب وہ ڈاکٹر کے پاس گئی تو اسے ایسی خبرملی کہ سن کر خون کے آنسو رونے لگی

اس خاتون کے دانت میں درد ہوا اور جب وہ ڈاکٹر کے پاس گئی تو اسے ایسی خبرملی کہ ...
اس خاتون کے دانت میں درد ہوا اور جب وہ ڈاکٹر کے پاس گئی تو اسے ایسی خبرملی کہ سن کر خون کے آنسو رونے لگی

  


لندن(نیوزڈیسک) دانت میں درد ایک عام سی بات سمجھی جاتی ہے لیکن آج ہم آپ کو ایک ایسی خاتون کے بارے میں بتائیں گے جس کے دانت میں درد ہوئی اور وہ ڈاکٹر کے پاس گئی تو اسے پتا لگا کہ وہ کینسر میں مبتلا ہے۔

تفصیلات کے مطابق 27سالہ گیما ووڈ کو دانت میں درد محسوس ہوئی تو اہ ڈاکٹر کے پاس گئی جس نے اسے بتایا کہ وہ کینسر میں مبتلاہے اور اسے کیموتھراپی کے ذریعے ٹھیک کیا جاسکتا ہے۔دوبچوں کی ماں گیما نے ڈاکٹروں کی ہدایت کے مطابق کیموتھراپی اور ریڈیوتھراپی کروائی اور چار ماہ میں ٹھیک ہوگئی ۔اس کا دماغ اس وقت بند ہوگیا جب ڈاکٹروں نے اسے بتایا کہ انہوں نے اس کا غلط علاج کیا ہے اور اسے یہ کینسر دور کروانے کے لئے مکمل طور پر مختلف کیموتھراپی کروانی ہوگی۔گیما کا دوبارہ علاج شروع ہوچکا ہے اور اسے یہ بھی یقین نہیں کہ وہ علاج کے بعد ٹھیک بھی ہوسکے گی کہ نہیں۔اس کا کہنا ہے کہ اسے یہ علم نہیں کہ اس بیماری کی وجہ سے اس کی کتنی زندگی باقی ہے اور آیا اس کا علاج ٹھیک طرح کیا جارہا ہے کہ نہیں۔اس کا کہنا ہے کہ پہلے کی کیموتھراپی کے بعد وہ کچھ سنبھلی اور اس کے بال دوبارہ آنے لگے تو ایک دم اسے بتایا گیا کہ اس کے کینسر کی تشخیص درست نہ تھی اور ا ب نئے سرے سے اس کا علاج شروع ہوگا۔گیما کا کہنا ہے کہ وہ جہاں سے چلی تھی اور اب پھر وہیں کھڑی ہے۔اس کا کہنا ہے کہ مارچ2014ءمیں اسے پہلی بار دانت میں درد ہوا تو وہ ڈینٹسٹ کے پاس گئی جس نے اسے انٹی بائیوٹکس دیں اور کئی ماہ کے علاج کے بعد بھی وہ ٹھیک نہ ہوئی تو مختلف ٹیسٹ کروائے گئے۔اکتوبر 2014ءمیں اسے یہ افسردہ خبر دی گئی کہ اسے کینسر ہے اور اس کی کیموتھراپی ہوئی جو کہ چار ماہ جاری رہی ۔اس کے بعد پھر اسے یہ خبر سنادی گئی کہ اب نئے سرے سے اس کا علاج ہوگا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...