غیر قانونی بھرتیوں نے نیسپاک کی ساکھ خراب کردی۔ نیپوا

غیر قانونی بھرتیوں نے نیسپاک کی ساکھ خراب کردی۔ نیپوا

لاہور (کامر س رپورٹر)آل پاکستان نیسپاک افیسر ایمپلائز ویلفیئر ایسوسی ایشن )نیپوا (کا اجلاس چیئرمین راجہ طارق نذیر اور جنرل سیکرٹری سہیل مجید کی صدارت میں ہوا جس میں کہا گیا کہ ملک کے سب سے بڑے کنسلٹنسی ادارے نیسپاک میں بڑے پیمانے پر سیاسی بنیاد پر غیر قانونی بھرتیوں کا انکشاف ہوا ہے۔ ملک کے اثاثہ عالمی ساکھ یافتہ ادارے کا حال بھی پی ائی اے ، ریلوے اور سٹیل ملز جیسا کیا جا رہا ہے۔سیاسی غیر قانونی بھرتیوں کے باعث صرف ڈھائی سال میں نیسپاک کے ذیلی ادارہ نیسپاک فاؤنڈیشن میں ملازمین کی مجموعی تعداد میں پانچ گنا اضافہ ہو گیا۔ تعداد 350 سے بڑھ کر 2400 ہو گئی۔ بھرتیوں میں پیپرارولز سمیت فاؤنڈیشن کے چارٹر اور قواعد و ضوابط کی دھجیاں اڑائی گئی ہیں

۔نیسپاک کے مختلف شعبوں کے سربراہوں کو ہراساں کرکے اسامیوں کی ڈیمانڈ زبردستی لے کر غیر تجربہ کار ملازمین کی ایک فوج بھرتی کر لی گئی ہے بھرتیوں کا سلسلہ تا حال جاری ہے۔ ملک کے سب سے بڑے کنسلٹنسی ادارے میں ان بے ضابطگیوں کے باعث نہ صرف عالمی سطح پر نیسپاک کی ساکھ شدید متاثر ہوئی ہے بلکہ ادارے کے دیوالیہ ہونے کا خطرہ ہو گیا ہے۔

مزید : کامرس


loading...