لاہور ڈویژن میں 5لاکھ سے زائدایکڑ اراضی کاشتکاری کے قابل نہیں

لاہور ڈویژن میں 5لاکھ سے زائدایکڑ اراضی کاشتکاری کے قابل نہیں

لاہور (سپیشل رپورٹر ) سوائل سروے آف پنجاب کی ایک رپورٹ کے مطابق صرف لاہور ڈویژن کے اضلاع میں5لاکھ32ہزار942ایکڑ زرعی اراضی سیم وتھور ذدہ ہونے کی وجہ سے کاشت کاری کے قابل نہیں رہی تاہم محکمہ زراعت ریسرچ ونگ کی طرف سے متاثرہ اراضی کو کاشت کاری کے قابل بنانے کے لئے 11ہزار300زمینداروں اورکاشتکاروں کو مشاورت فراہم کی جس میں محکمہ زراعت کے ذیلی ادارے زرخیزی زمین وتجزیہ اراضی نے لاہور میں 10901، ننکانہ میں15681اور قصور کے اضلاع میں 21936نمونہ جات لیبارٹریز کوبھجوائے جس کے بعد منصوبہ برائے سیم وکلر اٹھی زمینوں کی بحالی بائیو سپلائنIIکے تحت 2لاکھ ایکڑ زمین کو قابل کاشت بنایا گیا۔ جنوبی پنجاب کے5بڑے اضلاع بہاولنگر، ملتان، مظفر گڑھ، لیہ اور رحیم یار خان میں کاشتکاروں کے اشتراک سے 6ملین روپے سے ایک ہزار ایکڑ رقبہ کی اصلح کی گئی جبکہ پی سی ون کے تحت1056ملین ترمیم شدہ بجٹ کے تحت سوائل سیلنیٹی ریسرچیز پر کام جاری ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...