سعودی عرب نے ایران پر اب تک کا سب سے سنگین الزام لگادیا، ایرانی سفارتخانہ کس کام میں مصروف تھا؟ ایسا دعویٰ کہ سن کر ہر کوئی پریشان ہوجائے

سعودی عرب نے ایران پر اب تک کا سب سے سنگین الزام لگادیا، ایرانی سفارتخانہ کس ...
سعودی عرب نے ایران پر اب تک کا سب سے سنگین الزام لگادیا، ایرانی سفارتخانہ کس کام میں مصروف تھا؟ ایسا دعویٰ کہ سن کر ہر کوئی پریشان ہوجائے

  


ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں ایران کے لئے جاسوسی کے الزام میں پکڑے گئے ملزمان کے خلاف جاری مقدمے کے دوران ایران کے خلاف مزید ایسے الزامات سامنے آ گئے ہیں کہ دونوں ممالک کے درمیان نئے تنازعے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔ ایران کے خلاف لگائے گئے تہلکہ خیز الزامات میں کہا گیا ہے کہ ایرانی حکومت دارالحکومت ریاض میں واقعہ ایرانی سفارتخانے کے ذریعے سعودی مملکت کی سلامتی کے خلاف ایک خوفناک منصوبے پر عمل پیرا تھی۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق ایران کے لئے جاسوسی کے الزام میں گرفتار افراد میں سے دو کے خلاف جاری مقدمے کے دوران استغاثہ کی طرف سے لگائے گئے الزامات میں کہا گیا کہ ایرانی سفارتخانہ 200 ایسے افراد کی بھرتی میں ملوث ہے کہ جنہیں سعودی سلامتی کے خلاف استعمال کیا جانا تھا۔

’سعودی عرب نے انتہائی خطرناک ہتھیار اسرائیل سے خرید لیا‘ مگر کیسے؟ ایسا دعویٰ منظرعام پر کہ کھلبلی مچ گئی

مقدمے کے دوران ملزم نمبر 21 کے خلاف پیش کئے گئے الزامات میں کہا گیا کہ اس کے گھر پر تین ایرانی انٹیلی جنس اہلکاروں کی میٹنگ ہوئی، جس میں ان اہلکاروں کو سعودی سلامتی کے متعلق اہم ترین راز فراہم کئے گئے۔ ملزم پر یہ الزام بھی عائد کیا گیا ہے کہ اس نے ایرانی انٹیلی جنس کے اہلکاروں کو الیکٹرونک آلات اور جاسوسی کے لئے رقم فراہم کی، جبکہ ترکی کا سفر بھی کیا جس کے دوران مملکت کے بارے میں حساس معلومات منتقل کیں۔

ایران کے لئے جاسوسی کرنے کے الزامات کے تحت گرفتار کئے گئے ملزم پر یہ الزام بھی لگایا گیا ہے کہ اس نے سعودی عرب کے مشرقی صوبے میں ایک مخصوص مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والی شخصیات کے ساتھ رابطہ کیا اور انہیں ایرانی انٹیلی جنس کے ساتھ مل کر سعودی سلامتی کے خلاف کام کرنے پر اکسایا۔ دونوں ممالک کے درمیان حالات کو سخت کشیدہ کر دینے والے اس اہم مقدمے کی کارروائی جاری ہے۔

مزید : عرب دنیا


loading...