ٹوکیو اولمپکس گیمز آئندہ برس منعقد کروانے کا خیر مقدم، پاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن

ٹوکیو اولمپکس گیمز آئندہ برس منعقد کروانے کا خیر مقدم، پاکستان اتھلیٹکس ...

  

اسلام آباد (اے پی پی) پاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن کے صدر میجر جنرل (ر) محمد اکرم ساہی نے جاپان میں ٹوکیو اولمپکس گیمز 2020ء کو آئندہ برس منعقد کروانے حوالے سے عالمی اولمپک کمیٹی کے فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے، انسانیت کی زندگیاں بچانے کے حق میں ہیں انہوں موجودہ حالات میں کورونا وائرس کے باعث عالمی اولمپک کمیٹی کی جانب سے ٹوکیو اولمپکس گیمز 2020ئکو ایک سال کیلئے ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور اس فیصلے کو دنیا بھر کے کھلاڑیوں نے سراہا تھا۔

 اب اولمپکس گیمز آئندہ برس 23 جولائی سے 18 اگست تک جاپان کے شہر ٹوکیو میں ہی منعقد ہونگی۔ اکرم ساہی نے کہا کہ ٹوکیو اولمپک گیمز منعقد کروانے سے مزید کورونا وائرس پھیل سکتا تھا، عالمی اولمپک کمیٹی کا یہ فیصلہ انسانیت کی زندگیاں بچانے کے حق میں ہے اور پوری دنیا کے کھلاڑی گیمز ملتوی کرنے کے فیصلے کو سراہتے ہیں۔ یاد رہے کہ ٹوکیو اولمپک گیمز 24 جولائی سے 9 اگست تک کھیلی جانی تھی اور اس گیمز کی میزبانی آج سے سات سال قبل 7 ستمبر 2013ء کو جاپان کو سونپی گئی تھی۔ ایک سوال کے جواب میں اکرم ساہی نے کہا کہ اولمپک گیمز کے ایک سال ملتوی ہونے سے ہمارے جیولین تھرو کے کھلاڑی ارشد ندیم کو مزید تربیت کا موقع مل گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ارشد ندیم کو بیرون ملک تربیت کے لئے ہماری تین ممالک سے بات ہوگئی تھی جن میں فن لینڈ سرفہرست تھا جس میں جیولین تھرو کا دنیا کا سب سے بڑا سنٹر ہے اس کے بعد قازقستان اور ترکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا میں کورونا وائرس کی وباء کے باعث ارشد ندیم کو تربیت کیلئے اس وقت بیرون ملک بھیجنابہت مشکل کام ہے کورونا وائرس پر قابو پانے کے بعد ہر صورت ارشد ندیم بیرون ملک تربیت کیلئے بھیجا جائیگا۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ارشد ندیم سمیت پانچ اتھلیٹک کھلاڑیوں کو دو ماہ کیلئے 27 دسمبر سے 27 فروری تک جدید اور اعلی تربیت کیلئے چین بھیجا گیا تھا لیکن کورونا وائرس کے باعث وہاں پر یہ کھلاڑی اپنی تربیت کو زیادہ دیر برقرار نہ رکھ سکے۔ اب ہمارے پاس تیاری کیلئے مزید ایک سال کا وقت درکار ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کورونا وائرس کی وباء سے قبل ارشد ندیم پنجاب سٹیڈیم لاہور میں اپنے کوچ سید فیاض بخاری کی زیرنگرانی پریکٹس کر رہا تھا لیکن اب انڈور تربیت حاصل کر رہا ہے۔

تین کالم

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -