جتوئی: دریائے سندھ بے قابو، کٹاؤمیں اضافہ،لوگوں کی نقل مکانی شروع

  جتوئی: دریائے سندھ بے قابو، کٹاؤمیں اضافہ،لوگوں کی نقل مکانی شروع

  

جتوئی (نامہ نگار) تحصیل جتوئی کے نواحی علاقوں بیٹ دریائی لنڈی پتافی کے رہا ئشیوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ دریائے سندھ کا کٹاو کئی سالوں سے جاری ہے ہزاروں کی آبادی پر مشتمل ہے اس وقت 5 دن سے دریائے سندھ کے کٹاو کی (بقیہ نمبر22صفحہ6پر)

زدمیں ہے جسکی وجہ سے کاشتکاروں لوگ کی تیار فصلیں زیر آب آگئی ہیں اور باقی کی فصل ڈوب جانے کاخدشہ ہے اور شتکاروں نے ازخود کاٹ کر اپنے جانوروں کو چارے کے طور پر کھلا نا شروع کردے ہے انہوں نے کہا کہ ڈپٹی کمشنر مظفرگڑھ نے بھی علاقہ کا دور کیا تھا مگر آج تک اس پر کوئی عمل درآمد نہ ہو سکا اہل علاقہ کے لوگوں خدا بخش غلام فرید محمد بلال عیبداللہ حاجی قاسم نازک حسین واجد بخش عاشق حسین محمد الطاف سلیم ودیگر نے کہا کہ ہمارے مقامی سیاستدان نے بھی آج تک دریائے سندھ کے کٹاؤ کو روکنے کے لیے کوئی حفاظتی اقدامات نہ کیااہل علاقہ نے مقامی سیاستدان اور ضلعی انتظامیہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے اعلی حکام سے اپیل کی ہے کہ دریائے سندھ کے کٹاو کو روکنے کے لئے حفاظتی اقدامات کیا جائے کا مطالبہ کیا ہے۔

نقل مقانی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -