اپوزیشن رہنماؤں سے رابطے، کرونا کے مسئلے پر مل کر کام کرنے پر اتفاق،ٍٍٍٍٍملک میں لاک ڈاؤن ہو گا یا نہیں، قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس بلایا جائے: شہباز شریف

اپوزیشن رہنماؤں سے رابطے، کرونا کے مسئلے پر مل کر کام کرنے پر اتفاق،ٍٍٍٍٍملک ...

  

لاہور(جنرل رپورٹر،نمائندہ خصوصی) کرونا وباء کی صورتحال پر قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس بلانے کا مطالبہ کر دیا۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر نے کہا ہے کہ قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس بلاکر واضح کیا جائے کہ لاک ڈاؤن ہوگا یانہیں؟ حکومتی حکمت عملی واضع کی جائے، وزیراعظم کے قوم سے خطاب نے قومی سلامتی کے اہم فیصلوں سے متعلق سوال اٹھا دیا ہے۔ شہباز شریف کا کہنا تھا قوم کی جان بچانے کی قومی حکمت عملی بچوں کا کھیل نہیں، قوم کو شک میں ڈالنا، انتظامیہ اور عوام کیلئے مسائل پیدا کرنے والی بات ہے، کرونا ریلیف فنڈ کی ترسیل کیلئے فوری پارلیمانی مونٹرنگ کمیٹی تشکیل دی جائے،کرونا پر پارلیمانی صحت کی قائمہ کمیٹی کا ویڈیو لنک اجلاس فی الفور بلایا جائے۔علاوہ ازیں شہباز شریف نے بلاول بھٹو، مولانا فضل الرحمن اور دیگر سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں سے ٹیلی فونک رابطے کئے، جس میں کرونا وائرس کے مسئلے پر مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا گیا۔میاں شہباز شریف نے پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا جس میں کرونا وائرس کے بعد ملکی صورت حال پر گفتگو کی گئی، دونوں رہنماؤں نے عالمی وبا پر مل کر قابو پانے پر اتفاق کیا۔شہباز شریف نے مولانا فضل الرحمن، امیر جماعت اسلامی سراج الحق، آفتاب شیر پاؤ اور میر حاصل بزنجو،محمود خان اچکزئی سے بھی ٹیلی فون پر رابطہ کیا جس میں پارلیمانی ریلیف مانیٹرنگ کمیٹی کی تشکیل کے حوالے سے مشاورت کی گئی۔میاں شہبازشریف نے جماعت اسلامی اور الخدمت کی کرونا وباء سے بچاؤ کے لیے ریلیف سرگرمیوں کو سراہتے ہوئے جماعت اسلامی کے کاموں کی تعریف و تحسین کی۔

شہبازشریف

مزید :

صفحہ اول -