عالمی ادارہ صحت کے مطابق کورونا وائرس ہوا میں نہیں رہتا لیکن امریکی ہسپتالوں میں تازہ تحقیق کا کچھ اور ہی نتیجہ سامنے آگیا، انتہائی پریشان کن انکشاف

عالمی ادارہ صحت کے مطابق کورونا وائرس ہوا میں نہیں رہتا لیکن امریکی ہسپتالوں ...
عالمی ادارہ صحت کے مطابق کورونا وائرس ہوا میں نہیں رہتا لیکن امریکی ہسپتالوں میں تازہ تحقیق کا کچھ اور ہی نتیجہ سامنے آگیا، انتہائی پریشان کن انکشاف

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) عالمی ادارہ صحت کی طرف سے بتایا جا چکا ہے کہ کورونا وائرس ہوا میں معلق نہیں رہتا اور وہاں سے لوگوں میں منتقل نہیں ہوتا لیکن امریکی سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں اس کے برعکس انکشاف کر دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے اس تحقیق میں ان امریکی ہسپتالوں کے کمروں کی ہوا کے ٹیسٹ کیے جہاں کورونا وائرس کے مریضوں کو رکھا جا رہا ہے۔

یونیورسٹی آف نیبراسکا کے سائنسدانوں کی اس تحقیق میں پتا چلا کہ کورونا وائرس نہ صرف ہوا میں معلق رہ سکتا ہے بلکہ اس ہوا میں سانس لینے والے مریضوں میں منتقل بھی ہو سکتا ہے۔ تجربات میں معلوم ہوا کہ ہسپتال کے جن کمروں سے مریض صحت یاب ہو کر جا چکے تھے اور اب کمرے کئی دن سے خالی تھے، ان کی ہوا میں بھی کورونا وائرس موجود تھا۔ اس کے علاوہ ہسپتالوں کے کوریڈورز کی ہوا میں بھی کورونا وائرس معلق پایا گیا جہاں سے مریضوں کو لایا لیجایا جاتا ہے اور طبی عملہ آتا جاتا ہے۔ واضح رہے کہ دنیا بھر میں اب تک کورونا وائرس کے 7لاکھ 85ہزار 282مریض سامنے آ چکے ہیں اور 38ہزار سے زائد اموات ہو چکی ہیں۔

مزید :

تعلیم و صحت -کورونا وائرس -