سابق صدر رفیق تارڑ سچے عاشق رسولؐ، ہمہ جہت شخصیت تھے 

سابق صدر رفیق تارڑ سچے عاشق رسولؐ، ہمہ جہت شخصیت تھے 

  

لاہور(لیڈی رپورٹر) تحریک پاکستان کے مخلص کارکن محمد رفیق تارڑ کی زندگی پاکستان سے محبت کرنیوالوں کیلئے مشعل راہ ہے، وہ سراپا پاکستان تھے،محمد رفیق تارڑ اسلامی اقدار و روایات اور مشرقی تہذیب کاعملی نمونہ، شگفتہ مزاج انسان اور ہمہ جہت شخصیت تھے۔ تحریک ختم نبوت میں گرانقدر خدمات کے اعتراف میں انہیں ”مجاہد ختم نبوت“ کا خطاب دیا گیا تھا۔ایوان صدر میں ان کی سادہ طرز زندگی حکمرانوں کیلئے قابل تقلید ہے۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان میں تحریک پاکستان کے مخلص کارکن‘ سابق صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان اور نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے سابق چیئرمین محمد رفیق تارڑ کی وفات پر اظہار تعزیت اور ان کی خدمات کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے منعقدہ تعزیتی ریفرنس کے دوران کیا۔تعزیتی ریفرنس کا اہتمام نظریہ پاکستان ٹرسٹ نے تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے اشتراک سے کیا تھا۔ اس موقع پر چیئرمین نظریہ پاکستان ٹرسٹ میاں فاروق الطاف‘ سابق چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت و چیئرمین تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ چیف جسٹس(ر) میاں محبوب احمد‘ سینیٹر عرفان صدیقی‘ سینیٹر ولید اقبال‘ مرحوم کے صاحبزادگان محمدعرفان تارڑ اور محمدفاروق تارڑ، بہو سائرہ افضل تارڑ‘ سینئر صحافی و دانشور مجیب الرحمن شامی‘ سابق وفاقی وزیر چودھری نعیم حسین چٹھہ‘ صدر نظریہ پاکستان فورم آزاد کشمیر مولانا محمد شفیع جوش‘ پروفیسر ڈاکٹر پروین خان‘ بیگم خالدہ جمیل‘ بیگم صفیہ اسحاق‘ مسرت قیوم‘ ماہر تعلیم پروفیسر عابد شیروانی، وقار احمد میاں سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد بڑی تعداد میں موجود تھے۔ تعزیتی ریفرنس میں میاں فاروق الطاف نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ ایک ہمہ جہت شخصیت تھے، سید عطاء اللہ شاہ بخاری نے انہیں ”مجاہدِ ختم نبوت“ کا لقب عطا کیا،سینیٹر عرفان صدیقی نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ اسلامی اقدار و روایات اور مشرقی تہذیب کا نمونہ، شگفتہ مزاج اور ہمہ جہت شخصیت تھے۔سینیٹر ولید اقبال نے کہا کہ1999ء کے اوائل میں ایوان صدر میں محمد رفیق تارڑ سے پہلی ملاقات ہوئی،وہ دھیمے مزاج کے حامل ایک بردبار انسان تھے۔مجیب الرحمن شامی نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ صاف و کھرے انسان اور باغ و بہار شخصیت کے مالک تھے۔ علامہ اقبال اور مولانا ظفر علی خان کے اشعار انہیں ازبر تھے، انہیں دیکھ کر قرون اولیٰ کے مسلمانوں کی یاد تازہ ہو جاتی تھی۔ قناعت پسندی اور کفایت شعار ی میں اپنی مثال آپ تھے۔وہ سچے عاشق رسولؐ،سفیر ختم نبوت اور ہمارے اسلاف کی تصویر تھے۔ مرحوم کی بہو اور سابق وفاقی وزیر سائرہ افضل تارڑ نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ ہمہ جہت شخصیت تھے، انہوں نے دین اور دنیا کا خوبصورت کمبی نیشن بنا کر زندگی بسر کی،گھریلو زندگی میں انصاف پسندی ہمیشہ ان کے مدنظر رہی۔چوہدری نعیم حسین چٹھہ نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ نفیس اور مہربان شخصیت تھے۔مولانا محمد شفیع جوش نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ صحیح معنوں میں اقبال کے مردِ مومن اور قائداعظم کی وراثت کے اصل وارث تھے۔پروفیسر عابد شیروانی نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ کی زندگی جہد مسلسل سے عبارت رہی۔پروفیسر ڈاکٹر پروین خان نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ نے بطور طالبعلم تھریک پاکستان میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔بیگم صفیہ اسحاق نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ بردبار، اصول پسند اور حق و صداقت کے علمبردار تھے۔بیگم خالدہ جمیل نے کہا کہ محمد رفیق تارڑ سراپا اسلام تھے۔آخر میں مولانا محمد شفیع جوش نے محمد رفیق تارڑ کی مغفرت اور بلندی درجات کیلئے دعا کروائی۔

تعزیتی ریفرنس

مزید :

صفحہ آخر -