عافیہ موومنٹ کا ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے 19 سال جیل میں گزارنے پر مظاہرہ

        عافیہ موومنٹ کا ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے 19 سال جیل میں گزارنے پر مظاہرہ

  

پشاور(سٹی رپورٹر)عافیہ مومنٹ پشاور نے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی امریکی قید میں انیس سال پورے ہونے کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے اقدامات اٹھا کر قوم کی بیٹی کو واپس لایا جائے مظاہرے میں کثیر تعداد میں عافیہ مومنٹ خیبر پختونخوا کے رضاکاروں نے کی جنہوں نے ہاتھوں میں پلے کاردز اٹھا رکھے تھے جن پر عافیہ صدیقی کے رہائی کے نعرے درج تھے مظاہرے کی قیادت عافیہ مومنٹ کے رہنما انعام اللہ مروت اور وسیم عباس نے کی اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ 31مارچ 2003ایک سیاہ ترین دن تھا جب ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو تین کمسن بچوں سمیت اغوا کر کے افغانستان بگرام جیل میں پانچ سال تک غیر قانونی طور پر قید کرنے کے بعد امریکی عدالت میں جھوٹا مقدمہ چلا کر ظالمانہ اور غیر منصفانہ طویل نہ ختم ہونے والی سزا سنا دی گئی جسکی مثال دنیا کی تاریخ میں نہیں ملتی انہوں نے کہا ڈاکٹر عافیہ صدیقی حافظ قرآن،معلمہ،ایم ائی ٹی اور پی ایچ ڈی ہولڈر اور دنیا کی ذہین ترین خاتون تھی اور دنیا میں امن کا پرچار کرنا چاہتی تھی،ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو جھوٹے مقدمے میں پھنسا کر نہ کردہ جرم کی پاداش میں امریکی قید میں ڈال دیا گیا جو کہ غری قانونی،غیر ائینی اور غیر شرعی کام دورے فرغونیات میں بھی نہیں ہوا انہوں نے کہا کہ قوم کی بیٹی کو پانچ سالوں سے تمام قیدی سہولیات سے محروم کیا گیا ہے اور اس دوران ایک بار بھی اُسکی خاندان سے ملاقات اور ٹیلیفون کے ذریعے بات کرنے کی سہولت نہیں دی گئی جو ظلم کی انتہاء ہے انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے فلفور اقدامات اٹھائے جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -