پشاور،34 پولیس اہلکاروں کے تبادلے اور تعیناتی کے احکامات

      پشاور،34 پولیس اہلکاروں کے تبادلے اور تعیناتی کے احکامات

  

پشاور(کرائم رپورٹر)کیپیٹل سٹی پولیس پشاور نے 34پولیس اہلکا رو ں کے تبا دلے اور تعینا تی کے احکامات جا ری کر دیئے اس سلسلے میں جا ر ی ہو نے والے اعلا میہ کے مطابق اسسٹنٹ سب انسپکٹر لیا قت علی کو پولیس لا ئن سے تبد یل کر کے انچار چ پولیس چوکی پیر بالا مچنی گیٹ تعینا ت کر دیا گیا جبکہ ہیڈ کا نسٹیبل ملک آ ما ن کو پولیس لا ئن، فضل الہی کو محرر پولیس سٹیشن پھندو، فر ید اللہ کو تھا نہ حیا ت آباد، محمد شبیر کو انچار پولیس چوکی پجگی روڈ، حمید اللہ کو پولیس لا ئن، مظہر شیر کو محرر تھا نہ یکہ توت، راحت شاہ کو یکہ توت سے تھا نہ رحما ن با با، نو ر محمد کو تھا نہ گلبہار، قمر شہزا دخان کو پولیس لا ئن، رحمت اللہ کو تھا نہ ہشت نگری، پر ویز خان کو تھا نہ گلبر گ امداد اللہ کو تھا نہ شا ہ پو ر، فدا محمد کو شاہ پو ر سے تھا نہ خزا نہ، عابد علی کو تھا نہ سر بند سے تھا نہ خزا نہ، ظفر علی کو پولیس لا ئن، میر اعظم کو تھا نہ سربند، وسیع اللہ کو سر بند سے پولیس لا ئن، محمد اسرار کو تھا نہ فقیر ا ٓباد، محر ر فقیر آ باد فضل جان کو پولیس لائن، جما ل شاہ کو پی اے ٹو ڈی اسی پی رورل، زما ن خان کو تھا نہ ریگی، عبدالطیف کو تھانہ پشتہ خرہ، جو اد اللہ کو پولیس لا ئن، جاو ید خان کو داؤ د زئی سے انچا رچ پولیس چوکی سر ہ خا و رہ متنی، محمد جان کو انچار ڈی آ ر سی حیا ت آباد،شیر عبا س کو انچا ر ج ڈی آ ر سی دا ؤ د زئی، ما ثل خان کو ایڈ یشنل ایس ایچ او تھا نہ ہشت نگری، محمد آیا ز کو تھا نہ پہاڑی پو رہ، سہیل اختر کو تھا نہ پہاڑی پو رہ، نو ید خان کو تھا نہ یکہ توت، روح اللہ کو تھا نہ پشتہ خرہ اور ہیڈ کا نسٹیبل اصغر خان کو پولیس لا ئن سے تبد یل کر کے جنرل ڈیو ٹی تھا نہ آغا میر جا نی شاہ تعینات کر دیا گیا ہے۔                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                         

مزید :

پشاورصفحہ آخر -