قاہرہ میں جامعہ الازھرکے سربراہ کی میزبانی میں ہنگامی اجلاس میںطے پایا گیا

قاہرہ میں جامعہ الازھرکے سربراہ کی میزبانی میں ہنگامی اجلاس میںطے پایا گیا

قاہرہ ( اے این این )مصر کی سب سے بڑی علمی درسگاہ جامعہ الازھر اور عرب ڈاکٹر ایسوسی ایشن نے مقبوضہ بیت المقدس کو یہودیانے اورمسجد اقصی کےخلاف سازشوں کی مشترکہ تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں پیر کے روز قاہرہ میں جامعہ الازھرکے سربراہ ڈاکٹر احمد الطیب کی میزبانی میں ایک ہنگامی اجلاس منعقد ہوا جس میں عرب ڈاکٹر ایسوسی ایشن کے نمائندوں اور القدس انٹرنیشنل آرگنائزیشن کے مندوبین نے شرکت کی ۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق شیخ الازھر کی سربراہی میں منعقدہ اس ہنگامی اجلاس میں قبلہ اول کودرپیش خطرات کا جائزہ لیا گیا ۔ اس موقع پرعرب ڈاکٹر ایسوسی ایشن کے مندوبین اور القدس فاو¿نڈیشن کے نمائندوں نے شیخ الازھر کو مسجد اقصی پر یہودیوں کے تازہ حملوں کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی۔ اجلاس میں ڈاکٹر ایسوسی ایشن کے رکن ڈاکٹر جمال عبدالسلام نے بتایا کہ اسرائیلی حکومت کی شہ پر انتہا پسند یہودی مسجد اقصی میں ماہ صیام کے دوران روز مرہ کی بنیاد پر داخل ہوتے ہیں اور نمازیوں اور معتکفین پر تشدد کرتے ہیں۔ یوں قبلہ اول کی صہیونیوں کے ہاتھوں بے حرمتی اب روز کا معمول بن چکی ہے اور قابض صہیونی فوج اور پولیس شرپسند یہودیوں کو ہرقسم کا سیکیورٹی تحفظ فراہم کرتے ہیں۔اس موقع پر شیخ الازھر نے مسجد اقصی میںیہودیوں کے مسلسل داخل ہونے کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور عرب ایسوسی ایشن اور انسانی حقوق کی دیگر تنظیموں کو قبلہ اول کے ساتھ رابطے تیز کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ اجلاس میں ڈاکٹر ایسوسی ایشن اور جامعہ الازھر نے مسجد اقصی پر یہودیوں کے حملوں کی مشترکہ تحقیقات کا بھی فصیلہ کیا ہے۔ اس مقصد کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جو جلد اپنا کام شروع کرے گی۔

مزید : عالمی منظر