ڈاکٹروں کا سروس سٹرکچر، جنرل کیڈرز کی طرف سے فریق بننے کی درخواست منظور

ڈاکٹروں کا سروس سٹرکچر، جنرل کیڈرز کی طرف سے فریق بننے کی درخواست منظور

لاہور (پ ر) لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس اعجاز الحسن کی عدالت میں ڈاکٹر ز کے سروس سٹرکچر کے سلسلے میں جاری عدالتی کارروائی میں جنرل کیڈر ڈاکٹر ایسوسی ایشن کی طرف سے فریق بننے کے لئے دائر کردہ درخواست کو منظور کرلیا گیا اور حکم دیا کہ جنرل کیڈر ڈاکٹر ایسوسی ایشن کی طرف سے اگلے چند روز میں سروس سٹرکچر کے حوالے سے تجاویزات عدالت عالیہ اور محکمہ صحت کو جمع کروائی جائیں۔ جنرل کیڈر ڈاکٹر ایسوسی ایشن GCDA کے صدر ڈاکٹر مسعود اختر شیخ نے عدالت عالیہ سے استدعا کی کہ محکمہ صحت کے کم و بیش 14ہزار ڈاکٹرز کے مستقبل کا فیصلہ کرتے ہوئے اس بات کا خیال رکھا جائے کہ پہلے سے موجود جنرل کیڈر ڈاکٹر کی سنیارٹی اور مستقبل متاثر نہ ہو جو لوگ پہلے سے گریڈ 19اور 20 میں ترقی پانے کی اہلیت رکھتے ہیں جن کی کل سروس بالترتیب 12 تا 17سال ہوچکی ہے۔ ان کو فی الفور ترقی دے کر ان کے تحفظات کو دور کیا جائے۔ GCDA کے صدر ڈاکٹر مسعود شیخ نے اپنے موقف کی وضاحت کرتے ہوئے استدعا کی کہ جنرل کیڈر ڈاکٹروں کی ٹیچنگ اور سپیشلسٹ کیڈر میں چلے جانے اور کم و بیش مختلف اداروں میں 900 مزید سیٹیں شامل ہونے کے بعد ضروری ہے کہ ڈاکٹرز کی سنیارٹی لسٹ کو ازسر نو بنایا جائے اور ترقی کے مرحلے کوبلاتاخیر طے کیا جائے۔ ڈاکٹر مسعود شیخ نے عدالت کو بتایا کہ جنرل کیڈر ڈاکٹرز اپنے مطالبات کے لئے پر امن ہیں اور ہر طرح کے نامساعد حالات میں بھی ملک و قوم کی خدمت کرتے رہے ہیں۔ اس لئے ان کے مسائل کو اولین ترجیح دی جائے۔

مزید : ایڈیشن 1


loading...