توہین عدالت کیس میں ملک ریاض کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مسترد

توہین عدالت کیس میں ملک ریاض کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مسترد

اسلام آباد(خبرنگار)سپریم کورٹ نے ملک ریاض کی توہین عدالت کیس میں حاضری سے استثنٰی کی درخواست مسترد کردی۔جبکہ ملک ریاض کے وکیل ڈاکٹر عبدالباسط نے موقف اختیار کیاہے کہ توہین عدالت کا پراناقانون ختم جبکہ نیاقانون سپریم کورٹ میں زیر چیلنج ہے ملک ریاض کے خلاف کیس کی سماعت ختم یا پھر انھیں حاضری سے استثنیٰ دیاجائے جسٹس میاں شاکراللہ جان کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے ملک ریاض کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کی ۔ملک ریاض کے وکیل عبدالباسط نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ توہین عدالت کے نئے قانون کے بعد ملک ریاض کے خلاف کارروائی غیرموثرہوگئی ہے عدالت بتائے اب نئے قانون کے بعدوہ اس کیس کی سماعت کس بنیاد پر جاری رکھے ہوئے ہے اب فیصلہ کردیں ویسے بھی نیا قانون اس وقت عدالت میں چیلنج ہے، توہین عدالت قانون پر مختلف درخواست گزار دلائل دے چکے ہیں اب وفاق کے وکلاءدلائل دے رہے ہیں اس لیے اتنا وقت نہیں لگے گااس لیے جب تک اس کا فیصلہ نہیں آجاتا سماعت ملتوی کردی جائے اس موقع پر عبدالباسط نے ملک ریاض کوعدالت میں حاضری سے مستثنٰی قراردینے کی درخواست بھی کی اورکہاکہ ملک ریاض بیمار ہیں اور وہ بیرون ملک علاج کے لیے گئے ہوئے تھے عدالتی نوٹس پر حاضر ہوئے تھے اس لےے اب انھیں دوبارہ علاج کے لیے بیرون ملک جاناچاہتے ہیں انھیں اس کی اجازت دی جائے اور حاضری سے مستثنیٰ قرار دیاجائے تاہم عدالت نے حاضری سے مستثنیٰ کی درخواست مسترد کرتے ہوئے ملک ریاض کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت 9 اگست تک ملتوی کردی۔

مزید : صفحہ اول