بھارت میں تاریخ کا بد ترین بریک ڈاﺅ ن، 22 ریاستیں اندھیرے میں ڈوب گئیں

بھارت میں تاریخ کا بد ترین بریک ڈاﺅ ن، 22 ریاستیں اندھیرے میں ڈوب گئیں

  

ممبئی، نئی دہلی(اےن اےن آئی، مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں منگل کی دوپہر بجلی فراہم کرنے والی اہم مشرقی اور شمالی گرڈ کے ناکام ہونے سے ملک کے تقریباً نصف حصے سے بجلی غائب ہوگئی ۔گزشتہ رات شمالی گرڈ ناکام ہوئے تھے جس سے نو ریاستیں کئی گھنٹے تک بجلی سے محروم رہیں تھیںاس بار شمالی گرڈ کے ساتھ ساتھ مشرقی گرڈ بھی ناکام ہوگئے۔ بھارتی ٹی وی کے مطابق بجلی کی معطلی سے دارالحکومت دہلی میں میٹرو ریل سمیت ملک کے کئی حصوں میں ریل کا نظام متاثر ہوا اور کھڑی ہوئی ریل گاڑیوں سے مسافروں کو باہر نکالا گےا۔پیر کے روز بھی شمالی بھارت کے بیشتر علاقوں میں ریل سروسز متاثر ہوئی تھیں۔ لیکن تقریباً دس گھنٹوں کے بعد پاور دوبارہ بحال کر دیا گیا تھا۔ابھی تک حتمی طور پر یہ پتہ نہیں چل سکا ہے کہ گرڈ کی ناکامی کی وجہ کیا ہے لیکن اطلاعات کے مطابق بعض ریاستیں اپنے حصے سے زیاد پاور لے رہی تھیں اسی لیے گرڈ متاثر ہوئی ہے۔شمالی گرڈ کے جنرل مینیجر وی کے اگروال کا کہنا ہے کہ شمالی اور مشرقی دونوں گرڈ ناکام ہو گئے ہیں ہمیں انہیں دوبارہ بحال کرنے کا موقع دیں۔ حکام کے مطابق دونوں گرڈ ایک ہی دن متاثر ہوئی ہیں۔ یہ دونوں گرڈ ملک کے نصف حصے سے بھی زیادہ حصوں تک بجلی فراہم کرتی ہیں اور تازہ اطلاعات کے مطابق ان کی ناکامی سے بائیس ریاستیں متاثر ہوئی ہیں۔ ملک کے شمالی علاقے میں دہلی، پنجاب، ہریانہ، اترپردیش، ہماچل پردیش اور مشرق میں مغربی بنگال، بہار اور جھارکھنڈ جیسی ریاستیں سب سے زیادہ متاثر ہوئی ہیں۔ بھارت میں توانائی کی شدید قلت ہے اور ملک کے بہت سے حصوں میں چھ گھنٹے بھی بجلی نہیں آتی ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ جب تک اس شعبہ میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری نہیں ہوتی اس وقت تک بجلی کی کمی کو پورا کرنا مشکل ہوگا۔جبکہ دوسری طرف ہسپتالوں میں بھی بجلی نہ ہونے کی وجہ سے لوگوں کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا ہے جبکہ آپریشننہ ہونے کے باعث کئی مریضوں کی زندگیاں خطرے میں پڑگئی ہیں۔ گزشتہ روز بھی شمالی ریاست کے گرڈ سٹیشنز فیل ہونے کی وجہ سے دس ریاستیں پندرہ گھنٹے سے زیادہ وقت تک بجلی سے محروم رہی تھیں جبکہ وزیراعظم آفس بھی اس بریک ڈاﺅن کی لپیٹ میں آیا تھا۔ دریں اثناءپاکستانی نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے بھارتی صحافی جیوتی ملہوترا نے کہا کہ بھا رت بیرون ملک سے جس قیمت پر بجلی خرید نا چاہتا ہے وہ ممکن نہیں رہی۔بجلی کے اخراجات زائد اورصارفین کو فراہم کی جانے والی بجلی کے نرخ کم ہیںتاہم آدھے سے زائد ہندوستان کی بجلی بند ہونے سے بھارتی حکومت اور عوام کی آنکھیں کھل گئی ہیںجبکہ ہرکوئی یہ جاننے کی کوشش کررہاہے کہ آخراتنا بڑا بریک ڈاﺅن کس طرح ہوا جس نے بھارت کوہلاکر رکھ دیا۔دنیابھر کے سرمایہ کاروں کے لیے بھی بھار ت میں توانائی کاسوال کھڑاہوگیاہے اوربھارت کی ساکھ کو بھی بری طرح دھچکا لگاہے

مزید :

صفحہ اول -