حقانی نیٹ ورک پہلے سے کمزور ترین پاک امریکہ تعلقات کیلئے بہت بڑاخطرہ ہے نیویارک ٹائمز

حقانی نیٹ ورک پہلے سے کمزور ترین پاک امریکہ تعلقات کیلئے بہت بڑاخطرہ ہے ...

نیو یارک(اے پی اے ) امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کے مطابق اوباما انتظامیہ کے اعلی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ دہشت گرد حقانی نیٹورک پہلے سے کمزور ترین پا ک امریکہ تعلقات کے لیئے بہت بڑاخطرہ ہے ۔امریکی و دیگر مغربی حکام کا کہنا ہے کہ حقانی نیٹورک اور پاکستانی ایجنسی آئی ایس آئی کے مابین گہرے مراسم ہیں اور وہ بہت زیادہ کام کر رہے ہیں ۔امریکی اخبار نیو یارک ٹائمز کا کہنا ہے کہ پاکستانی انٹیلیجنس نے حقانی نیٹورک کوملک بھر میں آزادانہ نقل و حرکت اور کاروبار کی اجازت دے رکھی ہے اور انہیں خلیجی ممالک تک سفر کی سہولیات بھی دے رکھی ہیںجہاں جا کر وہ اپنی تنظیم کے لیئے فنڈز اکٹھے کر رہے ہیں یہاں تک کہ حقانی نیٹورک کے سربراہوں میں سے کئی رہنما اور ان کے خاندان بغیر کسی مزاحمت اور چھیڑ چھاڑ کے پاکستان کے دارالحکومت اسلام آبادمیں رہائش پذیر ہیں۔ رپورٹ کے مطابق امریکہ کے افغانستان سے انخلاءکا عندیہ دینے کے بعد پاک افغان سرحد پر یکم جون کو ہونے والا حملہ جس میں حقانی نیٹورک ملوث ہو سکتا ہے کمزور ترین پاک امریکہ تعلقات پر ایک کاری ضرب ہے ۔ اخبار کے مطابق حقانی نیٹورک کی طرف سے امریکیوں پر بڑے حملے کی منصوبہ بندی سے دونوں ممالک کی سیاسی صورتحال اور باہمی تعلقات کو پیچیدگی کی آخری سطح پر لا کھڑا کیا ہے ۔رپورٹ کے مطابق ایک اعلی عہدیدار کا کہنا ہے کہ اوباما انتظامیہ میںعام تاثر پایا جاتا ہے کہ امریکہ پاکستان کے خلاف یکطرفہ سیاسی یا ضرورت پڑنے پر فوجی کاروائی کرے ۔ ان کا کہنا تھا کہ کئی ماہ سے پاکستان کی طرف سے نیٹو سپلائی کی بندش کی بحالی کے بعد پاک امریکہ تعلقات ایک نئے دور میں داخل ہوئے ہیںاور اگر حقانی نیٹ ورک کی طرف سے امریکیوں کو نقصان پہنچانے یا کابل میں امریکی سفارتخانے پر حملے یا اس میں گھس کر سفارت کاروں کو ہلاک کرنے کی کوشش کی گئی تو صورتحال میں تبدیلی آ سکتی ہے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...