’’تیری پسند تیرگی‘ میری پسند روشنی تو نے دیا بجھا دیا‘ میں نے دیا جلا دیا‘‘

’’تیری پسند تیرگی‘ میری پسند روشنی تو نے دیا بجھا دیا‘ میں نے دیا جلا ...

  

لاہور)جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے ساہیوال میں 1320 میگاواٹ کول پاور پلانٹس کی مین پاور بلڈنگ کے تعمیراتی کام کے آغاز کی تقریب سے پر جوش انداز میں خطاب کے دوران نام نہاد دھاندلی کے خلاف گذشتہ برس دےئے جانے والے دھرنوں پر کڑی تنقیدکی اورکہا کہ دھرنوں کے باعث ہمارے عظیم دوست ملک چین کے صدر کا دورہ ملتوی ہوگیا،سرمایہ کار واپس چلے گئے اورپاکستانی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا، تاہم چین کے صدر کے دورہ پاکستان کے بعدہم نے ایک نئے عزم کے ساتھ کام کا آغاز کیا گیا ہے۔پاکستانی معیشت کے خلاف ہونے والی ان تمام تر سازشوں اورراستے میں آنے والی تمام رکاوٹوں کے باوجود ہم نے اپنا سفر کھوٹا نہیں ہونے دیا،ہمارے ارادے بلند اور نیت نیک رہی،سفر کی تمام تر مشکلات کے باوجود ہماری نظریں منزل پر رہیں ۔وزیراعلیٰ نے دھرنا دینے والوں کو معیشت کے دشمن اور اندھیروں کے پجاری قرار دیتے ہوئے یہ شعر پڑھا۔’’تیری پسند تیرگی‘ میری پسند روشنی۔۔۔تو نے دیا بجھا دیا‘ میں نے دیا جلا دیا‘‘وزیراعلیٰ نے پاکستان کے بڑے بڑے سرمایہ کاروں کی جانب سے توانائی کے شعبہ میں سرمایہ کاری نہ کرنے پرانہیں آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے کہاکہ ہمارے عظیم دوست چین نے پاکستان میں تاریخی سرمایہ کاری کر کے دوستی اورمحبت کا حق ادا کیا ہے لیکن پاکستان میں اربوں کھربوں روپے کمانے والے دولت مندجنہوں نے یہاں لوٹ مار اور بینکوں کے قرضے ہڑپ کر کے محلات بنائے اورہوائی جہازتک خریدے انہوں نے پاکستان کے توانائی کے شعبہ میں سرمایہ کاری نہ کرنے کے حوالے سے بے حسی پر مبنی جس کردار کا مظاہرہ کیا ہے اس پر میں علامہ اقبال ؒ کے الفاظ میں یہ کہوں گا کہ۔’’یہ ناداں گر گئے سجدے میں جب وقت قیام آیا‘‘انہوں نے کہا کہ بڑے بڑے سرمایہ کار سن لیں اگر ان کا سرمایہ ملک کے کام نہ آیا تو عوام اسے چھین لیں گے۔

مزید :

صفحہ اول -