میاں بیوی میں مصالحت نہ ہونے پر 2بچے باپ 2ماں کے حوالے

میاں بیوی میں مصالحت نہ ہونے پر 2بچے باپ 2ماں کے حوالے

  

لاہور (نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے بچوں کی حوالگی کے کیس میں میاں بیوی کے درمیان مصالحت نہ ہونے پر 2بچے باپ اور2بچے ماں کے حوالے کردیئے ،عدالتی فیصلے کے بعد بہن بھائی ایک دوسرے سے جدائی پر زاروقطار روتے رہے۔ جسٹس شہرام سرور نے کیس کی سماعت کی.عدالتی حکم پر تھانہ بچیانہ پولیس نے چاروں بچوں کو عدالت میں پیش کیا تو عدالت نے کہا کہ میاں بیوی کے درمیان مصالحت نہ ہوئی تو ان کے بچوں کا مستقبل خراب ہو سکتاہے۔کمرہ عدالت میں موجود میاں بیوی کے درمیان مصالحت نہ ہونے پر عدالت نے 15سالہ تہمینہ شہزادی اور 8 سالہ تصور علی کو والد کے حوالے کر دیا جبکہ پونے 2 سالہ ابراہیم اور 5 سالہ عائقہ کو والدہ کے حوالے کر دیا.عدالتی فیصلہ سنتے ہی بہن بھائیوں نے رونا شروع کردیا ۔تہمینہ شہزادی تصور علی اور عائقہ اپنے والدین کے درمیان صلح کے لئے ان کی منتیں کرتے رہے اور پھوٹ پھوٹ کر روتے رہے جس سے عدالت کا ماحول بھی سوگوار ہوگیا تاہم میاں بیوی حوالے کئے گئے اپنے اپنے بچوں کو ساتھ لے کر چلے گئے ۔

بچے حوالگی

مزید :

صفحہ آخر -