ہری پور‘ سنٹرل جیل میں سب انسپکٹر حرکت قلب بند ہونے سے جاں بحق

ہری پور‘ سنٹرل جیل میں سب انسپکٹر حرکت قلب بند ہونے سے جاں بحق

ہری پور (نامہ نگار) قتل و اغواء کے مقدمہ میں سنٹرل جیل ہری پور قید پولیس کا سب انسپکٹر ما ما علی اصغر ہارڈ اٹیک سے جان بحق نعش ورثان کے حوالے تفصیلات کے مطابق محکمہ پولیس ہری پور میں تعنیات سب انسپکٹر ما ما علی اصغر ولد عرف ماما ولد مہد علی سکنہ جوگی موہڑہ نے سال 2008/2009میں مشہور شہرت یافتہ وکیل یاور سلیم کو اغواء کر کے اُس کے اہل خانہ سے بھاری معاوضہ وصول کیا بعد ازاں مذکورہ سب انسپکٹر نے ساتھیوں کی مدد سے وکیل کی نعش تربیلہ جھیل میں پھینک دی پولیس کے اعلیٰ افسران نے کیس کو ٹریس کیا جس میں ما ما علی اصغر اُور اُس کے دیگر ساتھیوں کے خلاف تھانہ سٹی میں مقدمہ علت 376مورخہ 26-05-2009بجرم 302,324,353,342,7ATA درج رجسٹرڈ ہوا اُورد ہشت گردی عدالت ایبٹ آباد کی طرف سے ما ما علی اصغر کو سزائے موت ہوئی جو کہ اپنی سزاء سنٹرل جیل ہری پور میں کاٹ رہا تھا گزشتہ روز ہارڈ اٹیک کے باعث سنٹرل جیل ہری پور میں جان بحق ہو گیا پولیس نے نعش ورثان کے حوالے کر دی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر