شیریں مزاری نے پریس کانفرنس کے دوران تحریک انصاف کی خاتون کارکن کے ساتھ وہی شرمناک حرکت کر ڈالی جس کی شکایت عائشہ گلالئی مسلسل کر رہی ہیں

شیریں مزاری نے پریس کانفرنس کے دوران تحریک انصاف کی خاتون کارکن کے ساتھ وہی ...
شیریں مزاری نے پریس کانفرنس کے دوران تحریک انصاف کی خاتون کارکن کے ساتھ وہی شرمناک حرکت کر ڈالی جس کی شکایت عائشہ گلالئی مسلسل کر رہی ہیں

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)عائشہ گلالئی کے الزامات کا جواب دینے کے لئے پاکستان تحریک انصاف کی رہنما شیریں مزاری کی قیادت میں پی ٹی آئی کی خواتین نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرنے آئیں انہوں نے عائشہ گلالئی کے الزامات کی سختی سے تردید بھی کی اور کہا کہ خواتین کو جتنی عزت تحریک انصاف میں ملتی ہے اتنی کوئی بھی سیاسی پارٹی نہیں دیتی، ہم نے خواتین کو خود اختیار بنایا ہے۔ہمارے جلسوں میں دور داراز سے خواتین شرکت کے لئے آتی ہیں کیوں کہ انہیں یہاں عزت ملی اس پر ایک صحافی نے سوال پوچھا کہ کیا تحریک انصاف کے جلسے میں ورکرز خواتین دیکھنے آتے ہیں اس پر پی ٹی آئی خواتین شدید برہم ہوگئیں اور انہوں نے صحافیوں کو کھری کھری سنادیں جس پر وہاں موجود صحافی سیخ پا ہوگئے اس موقع پر شیریں مزاری نے خواتین کو جھاڑ دیا اور صحافیوں سے کہا کہ یہ لوگ پارٹی میں نئے نئے آئے ہیں اور انہیں تہذیب نہیں ہے۔

”عمران خان نے یہ بات کہی تو بہت برا لگا کیونکہ۔۔۔“ عائشہ گلالئی نے پارٹی چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کس بات کا ذکر کیا؟ جان کر ہر لیڈر اپنے کارکنوں سے متعلق کچھ کہنے سے پہلے ہزار بار سوچے گا

تفصیلات کے مطابق عائشہ گلالئی کے الزامات پر پارٹی کا دفاع کرنے کے لئے پاکستان تحریک انصاف کی خواتین نے شیریں مزاری کی قیادت میں پریس کانفرنس کی، پریس کانفرنس کے دوران ایک صحافی نے پوچھا کہ کیا پی ٹی آئی کے ورکرز جلسوں میں خواتین کو دیکھنے آتے ہیں اس پر پی ٹی آئی کی خواتین رہنمائوں کی پریس کانفرنس کے دوران میڈیا سے تکراراورتلخی ہوگئی، شیریں مزاری نے صحافی کو بے وقوف کہا اور اپنے الفاظ واپس لینے پر اصرار کیا،جس کے بعد صحافیوں پریس کانفرنس چھوڑ کر جانے لگے لیکن بعدازاں سینئر صحافیوں کی مداخلت پر دوبارہ پریس کانفرنس شروع کی گئی جس میں شیریں رحمان کا کہنا تھا کہ ہمارے ورکرزخان صاحب کی تقریرسننے آتے ہیں،خواتین دیکھنے نہیں۔پی ٹی آئی میں کئی خواتین نئی سیاست میں آئی ہیں،ان میں تہذیب نہیں اس لئے میں آپ سے معذرت خواہ ہوں۔

مزید : قومی