پیف سے منسلک سکولوں کے اساتذہ کو تنخواہیں ادا کی جائیں : عبد الحمید مصطفائی

پیف سے منسلک سکولوں کے اساتذہ کو تنخواہیں ادا کی جائیں : عبد الحمید مصطفائی

لاہور(فورم :رپورٹ:حسن عباس زیدی،تصاویر :ذیشان منیر)پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے زیر انتظام چلنے والے تعلیمی ادارے اور اساتذہ فنڈ نہ ملنے کے باعث پریشانی کا شکار اور تنخواہوں سے محروم لاکھوں بچوں کا تعلیمی مستقبل خطرے میں پڑ گیا۔اس فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام چلنے والے تعلیمی اداروں کو مالی اور دیگر معاملات چلانے میں دشواری پیش آررہی ہے۔عید الفطر سے لے کر اب تک حکومت پنجاب کی جانب سے کسی قسم کا کوئی فنڈ جاری نہیں ہوا جب بنک سے رابطہ کرتے ہیں تو جواب ملتا ہے کہ اس حوالے سے نگران حکومت نے فنڈ جاری نہیں کئے۔ ان حالات میں اس سسٹم کے تحت پرائیویٹ سکولوں میں زیر تعلیم 30لاکھ بچے متاثر ہورہے ہیں ان خیالات کا اظہار آل پاکستان پرائیویٹ سکولز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری عبد الحمید مصطفائی ،مرکزی صدر میاں شبیر احمد ہاشمی ،سیکرٹری فنانس محمد رزاق ساجد ،صدر قصور محمد الیاس دانش اور میڈیا ایڈوائزر محمد تنویر شاہد نے ’’پاکستان فورم‘‘میں گزشتہ روز کیا۔عبد الحمید مصطفائی نے بتایا کہ پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے زیر انتظام چلنے والے سکولوں میں بچوں کو تعلیم اور کتب بالکل مفت فراہم کی جاتی ہیں فنڈز نہ ملنے کے باعث 3لاکھ اساتذہ کو تنخواہ نہیں دی جاسکی اس کے ساتھ ساتھ ان عمارتوں کے کرائے بھی ادا نہیں کئے گئے جن میں ہمارے سکول قائم ہیں ۔کرایہ نہ ملنے کی وجہ سے عمارتوں کے مالکان ان کو تالا لگانے پر مجبور ہیں ۔میاں شبیر احمد ہاشمی نے کہا کہ ہماری نگران حکومت سے گذارش ہے کہ وہ عید الاضحیٰ سے قبل فوری طور پر ہمارے تمام بقایاجات اور فنڈز کی ادائیگی کو یقینی بنائے تاکہ عید قربان پر اساتذہ قربانی سے بچ جائیں اور لاکھوں بچوں کا تعلیمی سلسلہ بھی جاری رہ سکے۔2002ء میں چوہدری پرویز الٰہی کی حکومت نے پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن جیسے بہترین اور فلاحی منصوبہ شروع کیا تھا گزشتہ 16سالوں میں پہلی مرتبہ اس قسم کی پریشانی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ محمد رزاق ساجد ،محمد الیاس دانش اور محمد تنویر شاہد نے بھی ملے جلے جذبات اور خیالات کا اظہار کیا ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...