نواز شریف پمز ہسپتال سے اڈیالہ جیل ،منتقل ، سابق زیر اعظم کی حالت مستحکم نہیں : ڈاکٹرز

نواز شریف پمز ہسپتال سے اڈیالہ جیل ،منتقل ، سابق زیر اعظم کی حالت مستحکم نہیں ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آن لائن)میاں نواز شریف کے اصرار پر انہیں پمز ہسپتال سے اڈیالہ جیل منتقل کردیا گیا۔ذرائع نے نجی ٹی وی کو بتایا کہ نواز شریف کی جانب سے فوری اڈیالہ جیل منتقل کیے جانے کے مطالبے کے بعد انہیں سخت سکیورٹی میں جیل منتقل کردیا گیا۔ذرائع کے مطابق ڈاکٹرز کا مشورہ تھا کہ نواز شریف مزید کچھ روز ہسپتال میں قیام کریں تاہم سابق وزیراعظم کا اصرار تھا کہ انہیں جیل منتقل کیا جائے۔ڈاکٹرزکے مطابق نواز شریف کی حالت مستحکم نہیں اور ان کے مختلف ٹیسٹوں میں نتائج مختلف آرہے ہیں۔دوسری جانب پمز میں زیر علاج سابق وزیر اعظم نواز شریف کے میڈیکل بورڈ کے سربراہ ڈاکٹر اعجاز قدیر کو تبدیل کرنے کیساتھ ساتھ میڈیکل بورڈ کو ازسرنوتشکیل دے دیا گیا ہے اور ڈاکٹر اعجاز قدیرکی جگہ ڈاکٹر مطاہر شاہ کو میڈیکل بورڈمیں شامل کرلیا گیا۔واضح رہے کہ ڈاکٹر اعجاز قدیر کو اتوار کی رات دل کی تکلیف کے سبب پمز کے سی سی یو وارڈ میں داخل کردیا گیا تھا۔

پمز/ ڈاکٹرز

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) نگران وزیر داخلہ پنجاب شوکت جاوید نے کہا ہے کہ نوازشریف کی میڈیکل رپورٹ میں ایسی تجویز نہیں آئی کہ انہیں علاج کیلئے باہر بھیجا جائے۔لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شوکت جاوید نے کہا کہ نواز شریف کو ڈاکٹروں کی ہدایات پرپمز ہسپتال میں رکھا گیا ہے، جب تک ڈاکٹرز کہیں گے نوازشریف ہسپتال میں رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے ہسپتال جانے میں ہچکچاہٹ کا مظاہرہ کیا جبکہ پاکستان میں ہر طرح کا علاج موجود ہے، پاکستان میں دل کے امراض کا بھی بہت اچھا علاج ہوتا ہے۔نگران وزیر داخلہ نے مزید کہاکہ نواز شریف کی رپورٹیں بہتر ہیں اور مرض کی ہسٹری بنوانا آج کل کوئی مشکل کام نہیں۔

نگران وزیر داخلہ پنجاب

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...