چیئر مین واپڈا کا تحصیل پنڈیالئی مہمند ڈیم پراجیکٹ سائٹ کا دورہ

چیئر مین واپڈا کا تحصیل پنڈیالئی مہمند ڈیم پراجیکٹ سائٹ کا دورہ

مہمند (نمائندہ پاکستان) مہمند، چیئر مین واپڈا کا تحصیل پنڈیالئی مہمند ڈیم پراجیکٹ سائٹ کا دورہ۔ سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق تعمیراتی کام شروع کرنے کی تیاری کا جائزہ لیا۔ ڈی سی مہمند واصف سعید ، فرنٹیئر کور سیکٹڑ کمانڈر نارتھ اور کمانڈنٹ مہمند رائفلز نے بریفنگ دی۔ ڈیم سے 800 میگا واٹ بجلی ملنے کے علاوہ آبپاشی اور زراعت کیلئے وافر مقدار میں پانی ذخیرہ ہوگی۔ اضلاع میں سیاب کی شدت کم ہوگی۔ لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ مزمل حسین کا مقامی حکام اور قومی مشران سے اظہار خیال۔ قبائلی ضلع مہمند میں مقامی انتظامیہ کے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق منگل کے روز چیئر مین واپڈا لیفٹیننٹ کرنل (ریٹائرڈ) مزمل حسین نے ضلع مہمند تحصیل پنڈیالئی میں مہمند ڈیم پراجیکٹ سائٹ کا دورہ کیا۔اس موقع پر ڈی سی مہمند واصف سعید، ایف سی سیکٹر کمانڈر نارتھ اور کمانڈنٹ مہمند رائفلز عرفان علی نے نے اُن کا استقبال کیا اور علاقائی صورتحال کے بارے میں انہیں بریف کیا۔ اس موقعہ پر مقامی انتظامیہ حکام ، سیکورٹی آفسران اور قبائلی عمائدین سے اظہار خیال کرتے ہوئے چیئر مین واپڈا نے کہا کہ سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق 2018-19 ء میں مہمند ڈیم کی تعمیر شروع کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔ تعمیراتی کام آغاز سے 5 سال آٹھ ماہ میں مکمل کیا جائیگا۔ جس سے 800 میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی۔ اور 1.2 ملین ایکڑ فٹ پانی ذخیرہ ہو کر زراعت اور آبپاشی کی ترقی کا سبب بنے گی جس سے علاقے کے لوگوں میں معاشی بہتری آئیگی۔ انہوں نے کہا کہ مہمند ڈیم کے حوالے سے واپڈا نے فیزیبلٹی، ڈیزائن اور دیگر تیاریاں مکمل کی ہے۔ مہمند ڈیم کے بارے میں مقامی لوگوں کے مقامی نوکریوں کے علاوہ آبادی اور زمین متاثرین کے معاوضوں کا طریقہ کار وضع کیا گیا ہے۔ اور واپڈا ان متاثرین کو معاوضے ادا کریگی۔ انہوں نے کہا کہ ڈیم کی تعمیر سے ملک میں زراعت ، صنعتی، اقتصادی اور سماجی شعبوں میں بہت ترقی ہوگی۔ انہوں نے مہمند ڈیم کی تعمیر کیلئے بھر پور تعاؤن پر مقامی لوگوں کا شکریہ ادا کیا اور خصوصی دلچسپی لینے پر ڈی سی مہمند کے کردار کی تعریف کی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر