چکوال میونسپل کمیٹی بجٹ اجلاس،حزب اختلاف کاواک آؤٹ

چکوال میونسپل کمیٹی بجٹ اجلاس،حزب اختلاف کاواک آؤٹ

چکوال(ڈسٹرکٹ رپورٹر)میونسپل کمیٹی چکوال کے بجٹ اجلاس میں حزب اختلاف نے واک آؤٹ کردیا مگر اس کے باوجود بجٹ برائے سال2018-19اکثریتی رائے سے منظور کر لیا گیا۔42کروڑ89لاکھ سے زائد کے ٹیکس فری بجٹ کو منگل کے روز میونسپل کمیٹی کے اجلاس میں پیش کیا گیا جو وائس چیئرمین قمر شدیال کی صدارت میں منعقد ہوا ۔ اس موقع پر چیئرمین بلدیہ چوہدری سجاد احمد بھی موجود تھے۔ ایوان کو بتایا گیا کہ ترقیاتی منصوبوں کیلئے پانچ کروڑ19لاکھ روپے سے زائد کی رقم مختص کی گئی ہے جبکہ تنخواہوں اور دیگر غیر ترقیاتی مد میں35کروڑ 48لاکھ روپے رکھے گئے ہیں۔ اجلاس شروع ہوا تا قائد حزب اختلاف اکبر بادشاہ نے مطالبہ کیا کہ اب تک کی تمام ترقیاتی سکیموں کی تفصیلات پیش کی جائیں۔، چوہدری محسن حسن خان نے کہا کہ گزشتہ ڈیڑح سالوں میں شہر کا حلیہ بگاڑ دیا گیا ہے اور یہی وجہ ہے کہ چکوال شہر کے عوام نے قبضہ گروپ کو مسترد کردیا ہے۔ جبکہ ماما چوہدری خان بہادر نے کہا کہ بلدیہ کی آمدن بڑھانے کیلئے شہر میں موجود ٹرانسپورٹ اڈے جو کہ سیکورٹی رسک بن چکے ہیں ان کو بلدیہ کے جنرل بس اسٹینڈ میں منتقل کیا جائے۔ ملک غلام حُر نے کہا کہ میونسپل کمیٹی کو فنکشنل ہوئے تقریباً ڈیڑھ سال سے زائد کاعرصہ ہوچکا ہے مگر پورا شہر گندگی کا ڈپو بن چکا ہے اور اس حوالے سے میونسپل کمیٹی نے کوئی سنجیدہ اقدامات نہیں کیے ہیں۔ حزب اختلاف کے مطالبات پورے نہ ہونے پر اپوزیشن اراکین نے واک آؤٹ کیا جبکہ ان کی عدم موجودگی میں اکثریتی رائے سے بجٹ منظور کر لیاگیا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...